پی ٹی آئی حکومت کا نواز حکومت سے موازنے کا انوکھا انداز

پی ٹی آئی حکومت کا نواز حکومت سے موازنے کا انوکھا انداز


اسلام آباد ( 24 نیوز ) ملک کی اقتصادی صورتحال بہترہو یا نہ ہو، مہنگائی کم ہو یانہ ہو،عوام کو گیس اور بجلی ملے یانہ ملے، سوشل میڈیا پرپی ٹی آئی کے وزراء اورعہدیداروں کے مطابق سب کچھ ٹھیک ہورہا ہے۔

پی ٹی آئی کے ریونیو کے وزیرمملکت حماد اظہرآج کل ٹویٹر پر اپنی حکومت کا ن لیگ کی حکومت سے موزانہ کرنے کے سلسلہ میں کافی سرگرم ہیں لیکن اکثر موازنہ کرتے وقت یہ بھول جاتے ہیں کہ مقابلہ ایک جیسی اشیاء یا ایک جیسے وقت کا ہی ٹھیک ہوتا ہے،  دسمبر کا جون سے یا گندم کا چاول سے موازنہ کرکے کسی چیز کوبہتریاغلط ثابت نہیں کیا جاسکتا۔

اسٹیٹ بینک کے اعدادو شمارکے مطابق رواں مالی سال 5 ماہ میں حکومت نے جتنا قرض لیا اس کی ماضی میں کوئی مثال نہیں ملتی، جس کی وضاحت میں انہوں نے اپنے ٹویٹ میں کہا کہ پی ٹی آئی کے پانچ ماہ میں بیرونی قرضے میں ڈیڑھ ارب ڈالر کاہی اضافہ ہوا  لیکن ن لیگ کے دورمیں اوسطا ہر پانچ ماہ میں 2 ارب ڈالرکا قرض لیا گیا  لیکن انہوں نے اپنی اورن لیگ کی حکومت کے پہلے 5 ماہ کا موازنہ کرنا شاید مناسب نہیں سمجھا  کیونکہ ریکارڈ کے مطابق ن لیگ کے پہلے 5 ماہ کے دور میں بیرونی قرضوں میں صرف 4کھرب8ارب30کروڑروپے اضافہ ہواتھا جبکہ رواں مالی سال کے پہلے 5 ماہ میں بیرونی قرضوں میں 13کھرب 26 ارب روپے کا اضافہ ہوا ہے۔

انہوں نے قرض میں اضافے کی ایک وجہ روپے کی بے قدری کوبھی قراردیا  لیکن یہ نہیں بتایا کی روپے کی بے قدری بھی ان کی حکومت نے ہی کی ہے۔