طلال چودھری پر فردِ جرم کب عائد کی جائے گی؟


اسلام آباد(24نیوز)جسٹس اعجاز افضل کی سربراہی میں 3 رکنی بنچ نے کیس کی سماعت کی، پاکستان 24 کے نامہ نگار کے مطابق وکیل کامران مرتضی نے کہا کہ تقاریر کی سی ڈیزکل تاخیر سے فراہم کی گئیں۔

تفصیلات کے مطابق جسٹس اعجاز افضل نے کہا کہ آپ کے پہلے والے جواب کا جائزہ لے لیتے ہیں۔وکیل نے کہا کہ پہلا جواب عبوری تھا۔ تفصیلی تحریری جواب جمع کرانے کے لئے مہلت دی جائے۔ ٹرانسکرپٹ اور سی ڈیز میں فرق ہے۔ سی ڈیز کا جائزہ لے کر تفصیلی جواب جمع کرایں گے۔ عدالت نے حکم دیا کہ طلال چوہدری جواب میں اضافہ کرنا چاہیں تو کرسکتے ہیں۔

یہ بھی پڑھیں:نواز شریف نے عدالت سے نکلتے ہی بڑا اعتراف کرلیا  

ایڈیشنل اٹارنی جنرل نے کہا کہ 15 مارچ کو مصروفیات کے باعث پیش نہیں ہوسکتا۔ عدالت نے فرد جرم عائد کرنے کی تاریخ 15 سے 14 مارچ کردی۔

 واضح رہے کہ سپریم کورٹ نے طلال چوہدری پر توہین عدالت کیس میں فرد جرم عائد کرنے کا فیصلہ کر لیا ہے۔وزیر مملکت برائے داخلہ پر 14 مارچ کو فرد جرم عائد کی جائے گی۔