لودھراں جلسہ: عمران خان نے الیکشن کمیشن کے احکامات ہوا میں اڑا دیئے



لودھراں (24 نیوز) چیئرمین پاکستان تحریک انصاف عمران خان نے کہا کہ پاناما کیس جے آئی ٹی نے شریف خاندان کو بار بار موقعہ دیا، سپریم کورٹ نے نواز شریف کو مافیا کا گاڈ فادر کہا ہے۔

چیئرمین پاکستان تحریک انصاف عمران خان نے الیکشن کمیشن کے احکامات نظرانداز کرتے ہوئے لودھراں جلسے سے خطاب کیا۔ انہوں نے کہا کہ پاناما کیس جے آئی ٹی نے شریف خاندان کو بار بار موقعہ دیا، سپریم کورٹ نے نواز شریف کو مافیا کا گاڈ فادر کہا۔ مافیا اداروں، ججوں اور سیاستدانوں کو خریدتا ہے تاکہ مال بنایا جا سکے۔

یہ بھی پڑھئے: الیکشن کمیشن نے عمران خان کو لودھراں میں خطاب کرنے سے روک دیا

شریف خاندان اکیلے نہیں وزیروں کے ساتھ مل کر چوری کرتا ہے۔ جہانگیرترین نے نہ کرپشن کی نہ منی لانڈرنگ پھر بھی نااہلی کا عدالتی فیصلہ قبول کیا۔ جہانگیرترین سب سے زیادہ ٹیکس دیتے ہیں ہم سپریم کورٹ کا احترام کرتے ہیں۔

نواز شریف کے بچوں کی بیرون ملک کمپنیاں ہیں، حسن نواز 6 سو کروڑ روپے کے گھر میں رہتا ہے۔ نیب نے بلایا تو کہتے ہیں نیب نے میرے سوالوں کا جواب نہیں دیا۔

واضح رہے کہ الیکشن کمیشن نے چیئرمین تحریک انصاف عمران خان کو آج لودھراں میں ہونے والے جلسے میں خطاب سے روک دیا تھا۔ الیکشن کمیشن نے عمران خان کو خط لکھا تھا جس میں آگاہ کیا گیا کہ 12 فروری کو لودھراں میں ضمنی انتخاب ہے اور ضابطہ اخلاق کے تحت رکن قومی اسمبلی انتخابی حلقے میں جلسے سے خطاب نہیں کرسکتا۔

الیکشن کمیشن کے مطابق انتخابی ضابطہ اخلاق کے تحت وزیراعظم، وزیراعلیٰ، وفاقی وزراء، وزرائے مملکت انتخابی حلقے کا دورہ نہیں کرسکتے۔ صدراور وزیراعظم کے مشیر، صوبائی وزراء، قومی اسمبلی اور صوبائی اسمبلی کے وزراء بھی انتخابی حلقے کا دورہ نہیں کرسکتے۔

واضح رہے کہ تحریک انصاف کے رہنما جہانگیر ترین کی نااہلی کے بعد قومی اسمبلی کے نشست این اے 154 خالی ہوئی تھی جس پر ان کے صاحبزادے علی ترین پی ٹی آئی کے امیدوار ہیں۔