ایران کا پہلے سے زیادہ یورینیم افزودہ کرنے کا اعلان

ایران کا پہلے سے زیادہ یورینیم افزودہ کرنے کا اعلان


تہران ( 24نیوز ) ایران نے 2015 کے جوہری معاہدے میں یورینیم افزودہ کرنے کی طے شدہ حد سے تجاوز کرلیا اور اس کے ساتھ ہی یورپ کو مزید اقدامات لینے سے خبردار کیا ہے۔

ایران نے یہ اقدام واشنگٹن کی جانب سے عالمی قوتوں اور تہران سے طے کیے گئے جوہری معاہدے سے دستبرداری کو ایک سال سے زائد عرصہ گزرنے کے بعد لیا ہے۔

ایرانی جوہری توانائی کے ادارے کے ترجمان بہروز کمال وندی نے یورینیم افزودہ کرنےکی طے شدہ حد سے تجاوز کرنے اور اسے 4.5 فیصد کرنے کا اعلان کیا۔ بہروز کمال وندی نے کہا کہ یہ سطح ملک میں پاور پلانٹ کے ایندھن کی ضرورت کو مکمل طور پر پورا کرتی ہے،انہوں نے  اس بات کا عندیہ دیا کہ اسلامی جمہوریہ ایران یورینیم افزودہ کرنے کی اس حد کو موجودہ وقت کے لیے برقرار رکھ سکتا ہے جو جوہری ہتھیار بنانے کے لیے درکار سطح سے 90 فیصد کم ہے۔

دوسری جانب یورپی یونین کا کہنا ہے کہ وہ اس اقدام سے کافی تشویش میں مبتلا ہے اور ایران سے معاہدے کی تمام شرائط کی خلاف ورزی روکنے کا مطالبہ کیا۔ گزشتہ روز فرانس، جرمنی اور برطانیہ نے تہران سے یورینیم افزودگی کی حد سے تجاوز نہ کرنے پر اصرار کیا تھا۔

اظہر تھراج

Senior Content Writer