ن لیگی حکومت نے ملک کو قرضوں میں ڈبودیا

ن لیگی حکومت نے ملک کو قرضوں میں ڈبودیا


اسلام آباد(24نیوز) شاہد خاقان عباسی کی حکومت نے اقتدار کے آخری ہفتے اخراجات پورے کرنے کے لیے مرکزی بینک سے 140 ارب روپے قرض لیا۔

رواں مالی سال کے آغاز سے ہی حکومت مرکزی بینک سے قرض لے کر اخراجات پورے کر رہی تھی۔ اقتدار کے آخری ماہ تو قرض لینے کی رفتار کئی گنا بڑھ گئی،  اسٹیٹ بینک کے مطابق حکومت کے آخری چار ہفتوں کے دوران حکومت کی طرف سے مرکزی بینک سے 12 کھرب 70 کروڑ روپے کے نئے قرضے لیے گئے،  رواں مالی سال کے گیارہ ماہ کے دوران وفاقی حکومت نے مجموعی طور پر مرکزی بینک سے 25 کھرب 24 ارب 60 کروڑ روپے قرض لیا،  جو گزشتہ مالی سال سے 147 فیصد زیادہ ہے۔

یہ بھی پڑھیں: بھائیوں میں دراڑ ، وجہ”نثار“بن گئے

ملکی تاریخ میں مرکزی بینک سے ایک سال میں بھی اتنے زیادہ قرض کی کوئی مثال موجود نہیں، رواں مالی سال سے قبل حکومت مرکزی بینک کی مجموعی طور پر 22 کھرب 99 ارب 64 کروڑ روپے کی مقروض تھی۔  نئے قرضوں کے بعد مرکزی بینک سے حکومتی قرضوں کا حجم 48 کھرب 24 ارب 25 کروڑ روپے تک پہنچ گیا۔

وقار نیازی

سٹاف ممبر، یونیورسٹی آف لاہور سے جرنلزم میں گریجوایٹ، صحافی اور لکھاری ہیں۔۔۔۔