آئی جی پنجاب کی تبدیلی کے آگے الیکشن کمیشن دیوار بن گیا


اسلام آباد( 24نیوز )مسلم لیگ ن آئی جی پنجاب کی تبدیلی کے آگے رکاوٹ بن گئی،چیف جسٹس سپریم کورٹ سے نوٹس لینے کا مطالبہ کردیا جبکہ الیکشن کمیشن نے آئی جی محمد طاہر کو ہٹائے جانے کا نوٹس لے لیا ہے۔

واضح رہے کہ عام انتخابات یا ضمنی الیکشن کے دوران اس حلقے کے کسی بھی افسر کی تبدیلی نہیں کی جاسکتی،پنجاب کی متعدد سیٹوں پر ضمنی الیکشن ہورہے ہیں اس لئے آئی جی پنجاب بھی تبدیل نہیں کئے جاسکتے۔

دوسری جانب مسلم لیگ ن کی ترجمان مریم اورنگزیب کا میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہنا تھا کہ حکومت بتائے کہ راتوں رات ڈالر کو پر کیسے لگ گئے؟احتساب کی بات کرنیوالوں نے پانچ سال تک اپنا احتساب کمیشن بند رکھا،ضمنی الیکشن کے دوران حکومت کو پنجاب کا آئی جی تبدیل کرنے کی ضرورت کیوں پیش آگئی؟سپریم کورٹ سے مطالبہ ہے کہ حکومت کے اس اقدام کا نوٹس لیا جائے۔

یاد رہے حکومت نے ملک کے سب سے بڑے صوبے پنجاب کے آئی جی کو ایک ماہ دو دن بعد تبدیل کردیاہے،آئی جی محمد طاہر کی جگہ امجد سلیمی کو آئی جی بنایا گیا ہے، امجد سلیمی اس سے قبل سندھ میں آئی جی کی خدمات سرانجام دے چکے ہیں،امجد جاویدسلیمی کا تعلق پنجاب کے شہر ٹوبہ ٹیک سنگھ سے ہے،وہ ملتان کے آرپی او بھی رہ چکے ہیں۔