ہم جنس پرست لڑکیاں لاپتہ

 ہم جنس پرست لڑکیاں لاپتہ


لاہور ( 24نیوز ) لاہور کے علاقے مناواں میں آپس میں شادی کرنیوالی لڑکیاں لاپتہ ہوگئیں، ہم جنس پرستی کا کیس نیا موڑ اختیار کر گیا ، شیزہ کے والدین ایک بار پھر انصاف کے لیے سیشن کورٹ پہنچ گئے۔

تفصیلات کے مطابق مناواں کی صوبیہ اور سہیلی شیزہ گھر سے غائب ہو گئیں ، حصول انصاف کے لئے شیزہ کی والدہ اسماءاور والد محمد بوٹاسیشن کورٹ پہنچ گئے، ایڈیشنل سیشن جج کی عدالت میں بچی کی بازیابی کی درخواست دائر کر دی ، والدہ کا کہنا تھا کہ پولیس لڑکی کوبرآمدکرنے کے بجائے ہمیں ہراساں کررہی ہے، ہمیں انصاف دلایا جائے اور بیٹی کو تلاش کیاجائے، ہماری بیٹی کو صوبیہ ورغلا کر ساتھ لے گئی ہے، ہماری بچی کو برآمد کرایا جاے۔

ایڈیشنل سیشن جج طارق محمود شاد نے حبس بے جا کی درخواست پر بابر علی ایڈووکیٹ کے دلائل کے بعد ایس ایچ او مناواں کو طلب کر لیا۔

واضح رہے کہ گزشتہ ماہ مناواں مناواں کی صوبیہ نے سہیلی شیزہ کو بیوی بنا کر اپنے ساتھ رکھا ہوا تھا، والدین کے واپس لانے پر صوبیہ نے شیزہ کے والدین پر اغواءکا مقدمہ درج کرایا تھا، ایڈیشنل سیشن جج نے انوکھے کیس میں شیزہ کے والدین اور پوری فیملی ممبران کی عبوری ضمانتیں7 جنوری تک منظور کرتے ہوئے مناواں پولیس سے رپورٹ طلب کی تھی۔

اظہر تھراج

Senior Content Writer