بیوی کا علاج ٹھیک نہ ہونے پر ملزم نے نشتر میڈیکل یونیورسٹی کے پرو وائس چانسلر کو گولیاں ماردیں

بیوی کا علاج ٹھیک نہ ہونے پر ملزم نے نشتر میڈیکل یونیورسٹی کے پرو وائس چانسلر کو گولیاں ماردیں


ملتان ( 24نیوز ) ملتان میں نامعلوم موٹرسائیکل سواروں کی فائرنگ سےنشترمیڈیکل یونیورسٹی کے پرو وائس چانسلر ڈاکٹر احمد اعجاز مسعود زخمی ہوگئے۔ ڈاکٹرز کا کہنا ہے ڈاکٹر احمد کی ٹانگ سے دو گولیاں نکال دی گئی ہیں،اب ان کی حالت خطرے سے باہر ہے۔

ملتان پولیس کے مطابق نشتر میڈیکل یونیورسٹی کے پرو وائس چانسلر احمد اعجاز مسعود اپنے دو ساتھیوں کے ہمراہ لوہاری گیٹ کے علاقہ میں شاپنگ کر رہے تھے،دو نامعلوم موٹرسائیکل سواروں نے آکر فائرنگ کردی،اور فرار ہوگئے،،فائرنگ سے احمد اعجاز مسعود زخمی ہوگئے،جنہیں نشتر ہسپتال منتقل کردیا گیا،ڈاکٹروں نے آپریشن کرکے ان کی ٹانگ سے دو گولیاں نکال دی ہیں۔

ہسپتال ذرائع کے مطابق ڈاکٹر احمد اعجاز مسعود کی حالت خطرے سے باہر ہے۔ لیکن فائر لگنے سے ان کی ٹانگ کی ہڈی ٹوٹ گئی ہے۔ پاکستان میڈیکل ایسوسی ایشن ملتان کے صدر مسعود الرؤف ہراج نے واقعے کی پرزور مذمت کی اور اسے حکومت اور سکیورٹی اداروں کی ناکامی قرار دیا۔

ڈاکٹر مسعود الرؤف ہراج نے کہا کہ اگلے دو دن میں اگر سیکورٹی ادارے ملزمان کی گرفتاری میں کامیاب نہ ہوئے تو ڈاکٹرز بھرپور احتجاج کریں گے،دوسری جانب فائرنگ کرنے والے ملزم نے اپنا وڈیو بیان جاری کر دیا ،ملزم سخی قریشی کے وڈیو بیان کے مطابق بیوی کا علاج ٹھیک نہ کرنے پر ڈاکٹر پر فائرنگ کی،ملزم کا یہ بھی کہنا تھا کہ وہ بس ڈاکٹر کو سبق سکھانا چاہتا تھا اگر جان سے مارنے کا ارادہ ہوتا تو وہ گولی سر پرمارتا۔

ملزم سخی قریشی نے اعتراف کیاکہ اس نے ڈاکٹر کو زخمی اس وجہ سے کیا کہ آئندہ کوئی ڈاکٹر کسی مریض کا غلط علاج نہ کرے ،پولیس نے کارروائی کرتے ہوئے ڈاکٹر اعجاز مسعود کی مدعیت میں مقدمہ درج کر لیا جبکہ وزیر اعلیٰ نے بھی واقعہ کا نوٹس لے کر فوری کارروئی کی ہدایت جاری کر دیں ہیں ،،تاہم یہ امر تحقیات کے بعد ہی سامنے آئے گا کہ واقعہ ذاتی رنجش تھی یا پھر ڈاکٹر کے غلط علاج کی وجہ سے ملزم نے انتہائی قدم اٹھایا۔

اظہر تھراج

Senior Content Writer