سندھ حکومت نے 11کھرب 44ارب سے زائد کا بجٹ پیش کر دیا


کراچی(24نیوز) سندھ حکومت نے آئندہ مالی سال کے لئے 11کھرب 44ارب سے زائد کا بجٹ پیش کردیا، پیپلزپارٹی ارکان نے عوام دوست بجٹ پیش کرنے پر وزیراعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ کی تقریرکا خیرمقدم کیا۔

تفصیلات کے مطابق سندھ حکومت نے آئندہ مالی سال کے لئے 11کھرب 44ارب سے زائد کا بجٹ پیش کردیا۔ سندھ سرکار کا سرکاری ملازمین کی تنخواہوں میں10 فیصد اضافے کا اعلان کیا، ترقیاتی بجٹ کا تخمینہ 343.9 ارب روپے ہوگا۔ تعلیم کیلئے 17 ارب 87 کروڑ مختص، مختلف شہروں میں میں 7 نئے کیڈٹ کالج قائم کرنے کا بھی اعلان کردیا گیا۔

یہ بھی پڑھیں:احتساب کرنا اگر جرم ہے تو یہ جرم ہوتا رہے گا: چیئرمین نیب

 محکمہ صحت میں ترقیاتی کاموں کےلئے 15 ارب رپے مختص کرنے کا اعلان بھی کیا۔ نوابشاہ، مٹھی، خیرپور میں، این آئی سی وی ڈی کے تین نئے سینٹر قائم کئے جائیں گے۔کراچی میں اورنج اور ریڈ لائن کے ذریعے اربن ٹرانسپورٹ اور کمیو نی کیشن کی تعمیر کی منصوبہ بندی بھی کرلی گئی، رواں مالی سال 714منصو بوں کو مکمل کیا جائے گا۔

پڑھنا نہ بھولیں:چیئرمین نیب چوبیس گھنٹوں میں شواہد لائیں یا معافی مانگیں اور استعفیٰ دیں:نواز شریف

 اسمبلی میں وزیراعلیٰ سندھ مراد علی شاہ نے بجٹ تقریر میں کہاکہ کراچی میں خوف کی فضا ختم ہوچکی ہے، سماجی زندگی بھی بہتری کی جانب گامزن ہے، ہم نے پورے مالی سال لئے بجٹ تجاویز تیار کی ہیں، لیکن ایوان سے درخواست کی کہ صرف تین ماہ کے اخراجات کی منظوری دی جائے۔وزیراعلیٰ کا کہنا تھا کہ این ایف سی ایوارڈ نہ ملنے سے سندھ کو بڑے معاشی خسارے کا سامنا ہے۔

یہ خبر  ضرور پڑھیں:بچوں کیلئے خوشخبری، پنجاب حکومت کا سکولوں میں گرمیوں کی چھٹیوں کا اعلان

 بجٹ دستاویز کے مطابق آمدن میں کمی اور اخراجات میں اضافہ کی وجہ سے مالی سال 2017-18کا خسارہ 21ارب 21کروڑ روپے رہا، مراد علی شاہ کہنا تھا کہ لگاتار دو سال کی طرح اس سال بھی بجٹ میں کوئی بھی نیا ٹیکس نہیں لگایا گیا۔