گلوبل وارمنگ موسمیاتی تبدیلیاں، جنگلی حیات کی نسلوں کے خاتمہ کاخطرہ


24نیوز: گلوبل وارمنگ اورموسمیاتی تبدیلی سے جہاں انسانی آبادی کئی طرح کی مشکلات کاشکار ہے وہیں کئی طرح کی جنگلی حیات بھی اپنی بقا کی جنگ میں لگی ہے۔ موسمی تبدیلی سے کن نسلوں کوخاتمہ کاخطرہ ہے۔

 گلوبل وارمنگ کئی طرح کی ماحولیاتی تبدیلیوں کی وجہ بن رہی ہے۔ جیسے انسان موسمیاتی تبدیلیوں سے پریشان ہیں ایسے ہی زمین پرپائی جانے والی دیگر مخلوقات بھی اس سےمتاثرہورہی ہیں۔ موسمیاتی تبدیلیوں جانوروں کی کئی نسلوں کوخاتمہ کاخطرہ بھی لاحق ہوتاجارہاہے۔

شمالی امریکا کابرفانی خرگوش کوبھی بقا کاخطرہ لاحق ہے۔ یہ خرگوش سردیوں میں برف کے اندرگھربنا کررہتاہے۔ گرمیوں میں اضافہ اورسردیوں میں کمی کے باعث برف کے جلد پگھلنے پریہ خوبصورت خرگوش باہرنکلنے پرمجبورہوجاتاہے۔ اورتیزی سے درندوں کاشکارہوجاتاہے۔ماہرین کے مطابق ظالم موسمیاتی تبدیلی سےدرندوں کے ہاتھوں مرنے چانسز7فیصد تک بڑھ چکے ہیں۔

یہ بھی پڑھیں:طالبان کو مذاکرات کی میز پر لانے کیلئے پاکستان، افغانستان متفق
 
حشرات کے کنبہ کی ایک مکڑی اورچڈبھی خاتمہ کی جانب تیزی سے گامزن ہے۔ اس مکڑی کی نسل کوبھی بہارکے موسم کے وقت کی تبدیلی کے باعث خطرہ لاحق ہے۔ جس کی وجہ سے شہد کی نراورمادہ مکھیوں کی آمد کے وقت میں تبدیلی واقع ہوگیا ہے۔

یورپیئن نسل کاپرندہ فلائی کیچرکی گزربسرایک خاص قسم کے کیڑے پرہوتی ہے۔ اس کیڑے کی بہتات کے دنوں میں فلائی کیچر انڈے دیتا ہے تاکہ پیداہونے والے بچوں کوخوراک میں کمی کاسامنا نہ ہو۔ لیکن کیا کریں اس موسم کاجس کی وجہ سے فلائی کیچرکی خوراک اس خاص کیڑے کاموسم ہی بدل گیا اوراس موسمی تبدیلی سے نا آشنا یہ فلائی کیچر ہزاروں میل دوراڑکرآتوجاتا ہے لیکن خوراک کوموجود نہیں پاتا۔

فن لینڈ کے دوپرندے جوکسانوں کے کھیتوں میں ہل چلانے اوربیجائی کے بعد زمین پرگھونسلے بناکرانڈے دیتے ہیں۔ لیکن بہارکاموسم جلد آنے کی وجہ سےکسانوں کے ہل اوربیجائی کے بھی  2یا3 ہفتے پہلے ان کوگھونسلے بناکرانڈے دینے پڑتے ہیں۔ اورجب ان کھیتوں پرہل چلتا ہےتوگھونسلوں کے ساتھ انڈوں کاخاتمہ بھی یقینی سمجھیں۔اوریہ سلسلہ کیسے تھمے گا؟اس کاکسی کونہیں پتا۔