سپریم کورٹ نے اپنا فیصلہ واپس لے لیا

سپریم کورٹ نے اپنا فیصلہ واپس لے لیا


کراچی( 24نیوز ) سپریم کورٹ نے کراچی میں 6 منزلہ سے زائد بلڈنگز کی تعمیرات پر پابندی سے متعلق اپنا فیصلہ واپس لے لیا، ایسوسی ایشن آف بلڈرز اینڈ ڈیولپرز کے وفد کا کہنا ہے کے 500 سے زائد پروجیکٹ اور ایک ہزار ارب مالیت کی سرمایہ کاری رکی ہوئی تھی، اب نئے قانون کے مطابق عمارتوں کی تعمیر ہوگی۔

شہر قائد میں اب 6 منزلہ سے زائد بلڈنگز دوبارہ بن سکیں گی ، سپریم کورٹ نے 6 منزلہ سے زائد بلڈنگز کی تعمیرات پر پابندی سے متعلق اپنا فیصلہ واپس لے لیا، سپریم کورٹ کراچی رجسٹری میں چیف جسٹس پاکستان کی سربراہی میں شہر میں 6 منزلہ سے زائد عمارتوں کی تعمیر پر پابندی سے متعلق ایسوسی ایشن آف بلڈرز اینڈ ڈیولپرز (آباد) کی درخواست پر سماعت ہوئی۔

عدالت نے مختصر سماعت کے بعد شہر میں 6 منزلہ سے زائد بلڈنگز کی تعمیرات پر پابندی سے متعلق اپنا فیصلہ واپس لے لیا اور ساتھ ہی شہر میں قانون کے مطابق تعمیرات جاری رکھنے کا بھی حکم دیا،عدالت نے کہا کہ سندھ بلڈنگ کنٹرول اتھارٹی کے قوانین کے مطابق ہائی رائز تعمیر کرسکتے ہیں۔

2 سال سے لگی پابندی ختم ہوگئی

اس موقع پر چیف جسٹس پاکستان نے ریمارکس دئیے کہ چلیں انڈسڑی کے ساتھ بحریہ ٹائون کو بھی فائدہ ہوجائے گا،دوسری جانب عدالتی فیصلے کے بعد سپریم کورٹ کراچی رجسٹری کے باہر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے آباد کے چیئرمین حسن بخشی کا کہنا تھا کے آج عدالت نے پابندی ہٹادی ہے، 2 سال سے لگی پابندی ختم ہوگئی ہے، اب قانون کے مطابق بلڈنگز بنے گی،حسن بخشی کا مزید کہنا تھا کہ 500 سے زائد پروجیکٹ اور ایک ہزار ارب مالیت کی سرمایہ کاری رکی ہوئی تھی۔

اظہر تھراج

Senior Content Writer