چیف جسٹس کا لاہور بھر سے رکاوٹیں ہٹانے کا حکم


لاہور (24نیوز) سپریم کورٹ لاہوررجسٹری میں سکیورٹی کے نام پر سڑکوں کی بندش پر ازخودنوٹس کی سماعت کے دوران چیف جسٹس ثاقب نثار نے جاتی امرا،ماڈل ٹاؤن میں وزیراعلیٰ کیمپ آفس،طاہر القادری کی رہائشگاہ، گورنر ہاؤس، آئی جی آفس، پاسپورٹس آفس، ایبٹ روڈ، گارڈن آفس، چوبرجی میں جامعہ قدسیہ کے سامنے سے رکاوٹیں ہٹانے کا حکم دے دیا۔
 تفصیلات کے مطابق سپریم کورٹ لاہور رجسٹری میں چیف جسٹس ثاقب نثار کی سربراہی میں 3 رکنی بنچ نے سماعت کی، وزیراعلیٰ شہبازشریف بھی عدالت میں پیش ہوئے، دوران سماعت ایڈووکیٹ جنرل نے بند کی گئی سڑکوں کی تفصیلات عدالت میں پیش کی، چیف جسٹس ثاقب نثار نے استفسار کیا کہ سڑکیں کس قانون کے تحت بند کیں ،عدالت نے جاتی امرا، ماڈل ٹاؤن، گورنر ہاؤس اور دیگر مقامات کے سامنے سے رکاوٹیں ہٹانے کا حکم دے دیا اور آئی جی پنجاب کو سڑکیں کھول کر شام تک رپورٹ دینے کی ہدایت کر دی۔

واضح رہے کہ رکاوٹیں ہٹانے پر ماڈل ٹائون میں پولیس اور مظاہرین میں جھڑپ کے دوران متعدد افراد جاں بحق ہو چکے ہیں۔