مہندی لگانے کا بہترین طریقہ

مہندی لگانے کا بہترین طریقہ


لاہور(24نیوز) خواتین کے لئے کوئی بھی تہوار مہندی کے بغیر ادھورا ہوتا ہے ، جب تک ہاتھوں پر لگی خوبصورت مہندی ہاتھوں کی دلکشی میں اضافہ نہ کرے تہوار کا رنگ پھیکا پھیکا معلوم ہوتا ہے۔

مہندی کا لگانا ایک  فن چکا ہے۔ مہندی کا تعلق ہمارے معاشرے کے رسم ورواج سے جڑ چکا ہے، اس فن کی ماہر خواتین ہتھیلی  اور بازو پر  نہایت نفاست سے بڑے نفیس اور دیدہ زیب نقش و نگار بناتی ہیں ۔عورتوں کو تو اچھا لگتا ہی ہے، وہیں ان کے مجازی خدا یعنی کہ ان کے خاوند بھی دیکھ کر خوش ہوتے ہیں۔

یہ بھی پڑھیں: خواتین کی مشکل آسان،عید کی تیاری کیسے کی جائے؟جانیے اس خبر میں

شادی بیاہ ، عید نیز ہر تہوار کے رنگ خواتین کے لئے مہندی کے بغیر پھیکے پڑ جاتے ہیں، جتناگہرا مہندی کا رنگ ہوگا اتنی ہی پر لطف عید ہو گی مگر چند پیسوں کا لالچ خواتین کے سنگھار کو چاند پر داغ سے بدلنے کا مؤجب بنتا ہے ، آجکل مارکیٹ میں دستیاب مہندی کی تیاری میں مصنوعی کیمیکلز اور پی پی ڈی کا استعمال سوجن ، سوزش اور بلآخر جلد کے کینسر کو جنم دیتا ہے .


دکانداروں کا کہنا ہے کہ مہندی خریدتے وقت خواتین کا اصرار ہوتا ہے کی مہندی کا رنگ گہرا اور دیر پا ہونا چاہیے ، اس وجہ سے مہندی کی تیاری میں مختلف اجزا کا استعمال کیا جاتا ہےپرانے وقتوں میں پتھروں پر مہندی کے پتے پیس کر مہندی تیار کی جاتی تھی،اصل مہندی کی پیداوار جنوبی ایشیا اور افریقہ میں ہوتی ہے اس کی تیاری میں پتوں کو خشک کر کے سفوف بنانے ، پانی ، لیموں کا رس اور دیگر اہم تیل شامل کر کے پیسٹ بنانے کے مراحل شامل ہیں.

مہندی لگانے کا طریقہ: 

مہندی لگانی ہوتو سب سے پہلے اپنے ہاتھوں اچھی طرح صابن سے دھو کر صاف اور خشک کریں، معیاری کمپنی کی کون استعمال کریں جس میں مضر صحت کمیکلز شامل نہ ہوں۔ مہندی لگانے کے بعد اس کے اوپر سے کوئی چیز مت لگائیں۔ اکثر خواتین سوکھنے پر لیموں یا چینی کا پانی اوپر سے لگاتی ہیں یا وِکس کا لیپ کر دیتی ہیں۔ جس کا کوئی فائدہ تو نہیں ہوتا لیکن مہندی پھیل ضرور جاتی ہے۔

بچیاں اور خواتین ہاتھوں، پیروں اور بازووں پر مہندی کے ڈیزائن بنواتی ہیں۔ اب چونکہ عید کا موقع ہے تو اکثر خواتین چاند رات کو مہندی لگواتی ہیں  لیکن ان لڑکیوں کو میں کار آمد مشورہ دیتا چلوں کہ لڑکیاں عید سے دو دن پہلے مہندی لگائیں کیوںکہ مہندی کی رنگت دو دن بعد ہی نکھر کر سامنے آتی ہے۔

وقار نیازی

سٹاف ممبر، یونیورسٹی آف لاہور سے جرنلزم میں گریجوایٹ، صحافی اور لکھاری ہیں۔۔۔۔