سیکرٹری پاور ڈویژن نے زیرو لوڈ شیڈنگ کی تردید کر دی

سیکرٹری پاور ڈویژن نے زیرو لوڈ شیڈنگ کی تردید کر دی


 اسلام آباد( 24نیوز ) سیکرٹری پاور ڈویژن یوسف نسیم کھوکھر نے  کہا ہے کہ زیرو لوڈشیڈنگ عملی طور پرناممکن ہے۔کوئی علاقہ لوڈ شیڈنگ سےمستثنا نہیں۔ بجلی کے ترسیلی نظام میں خرابیاں موجود ہیں۔

سینیٹرفدا محمد کی زیرصدارت سینیٹ قائمہ کمیٹی برائے توانائی کے اجلاس میں سیکرٹری پاور ڈویژن یوسف نسیم کھوکھر کا حقائق سے پردہ اٹھاتے ہوئے کہنا تھا کہ زیرو لوڈشیڈنگ عملی طور پرناممکن ہے۔ 10 فیصد تک لاسز والے فیڈرز پر بھی ساڑھے 3 گھنٹےلوڈشیڈنگ ہورہی ہے۔

 یہ بھی پڑھیں:کراچی کو غیراعلانیہ لوڈ شیڈنگ سے چھٹکارا دلانے کیلئے ’نیپرا‘ کا بڑا اعلان 

علاوہ ازیں پیپکو حکام نے کمیٹی کو بتایا کہ لاسز کے تناسب سے مختلف شہروں میں 12 گھنٹے تک لوڈشیڈنگ جاری ہے۔جبکہ چئیرمین قائمہ کمیٹی بتایا کہ ٹرانسمشن سسٹم پر توجہ دینا ناگزیر ہے۔ پشاور الیکٹرک سپلائی کمپنی اور سکھر کی تقسیم کار کمپنی میں لائن لاسز میں اضافے پر ممبران کمیٹی نے برہمی کا اظہار کیا۔

پیسکو چیف ڈاکٹر امجد نے بتایا کہ پیسکو میں بجلی چوری عروج پر ہے۔ 992 میں سے 600 فیڈرز پر لاسز 50 سے 80 فیصد ہیں۔چیرمین کمیٹی اور ممبران کی طرف سے غیر اعلانیہ لوڈ شیڈنگ پر بات کرتے ہوے رمضان لوڈ منیجمنٹ پلان کو بھی جھوٹا دعوی قرار دے دیا۔

پڑھنا نہ بھولیں:حکومت کے لوڈ شیڈنگ ختم کرنے کے دعوے دھرے کے دھرے رہ گئے 

سیکرٹری پاور ڈویژن نے ترسیلی نظام میں خرابیوں کا اعتراف کرلیا، بتایا کہ اس سال ریکارڈ 20 ہزار8 سو میگاواٹ تک بجلی پیدا کی، ترسیلی نظام میں خرابیوں کی وجہ سےلوڈشیڈنگ ہوتی ہے۔