آشیانہ ہاؤسنگ اسکیم اسکینڈل،نیب نے مزید گرفتاریاں کرلیں


لاہور (24نیوز) نیب نے آشیانہ ہاؤسنگ اسکیم اور ایل ڈی اے سٹی اسکینڈل میں گرفتارسابق چیف انجینئر اسرار سعید، سابق سی ای او امتیاز حیدر، چیف انجینئرکرنل ریٹائرڈ عارف اور بلال قدوائی کا ریمانڈ حاصل کرلیا۔ 

نیب کے مطابق اسرار سعید نے پبلک پرائیویٹ پارٹنر شپ ایکٹ کی خلاف ورزی کرتے ہوئے لاہور کاسا ڈویلپرز کو غیر قانونی فوائد پہنچائے، ان کو پراجیکٹ کے کاغذات میں مبینہ ردوبدل کے الزام میں گرفتار کیا گیا ہے.بلال قدوائی نے غیرقانونی فزیبلیٹی رپورٹ تیار کی اور ایکٹ کے خلاف ڈویلپمنٹ معاہدے کی منظوری دی جس سے حکومتی خزانے کو اربوں روپے کا نقصان پہنچا۔

چیف انجینئر عارف مجید بٹ نے جے وی ارکان کے شیئر ہولڈنگ تناسب میں مبینہ ردوبدل سے آگاہی کے باوجود ایگریمنٹ کی منظوری دے دی. جے وی ایگریمنٹ میں 90 فیصد کی حصہ دار سپارکو کنسٹرکشن کمپنی کو صرف 9 فیصد شیئرز کی حامل بسم اللہ انجنیئرنگ سے تبدیل کیا گیا، جس سے قومی خزانے کو تقریبا ایک ارب روپے کا نقصان ہوا۔

 چیف ایگزیکٹو پی ایل ڈی سی امتیاز حیدر نے کاسا ڈویلپرز میں شیئر ہولڈرز کے تناسب میں مبینہ تبدیلی سے آگاہی کے باوجود ایگریمنٹ کو منظور کیا ۔ جس کا مقصد صرف لاہور کاسا ڈویلپرز کو مالی فائدہ پہنچانا تھا۔

 نیب حکام نے چاروں افسروں کو گزشتہ روز10 بجے تحقیقات کے سلسلے میں طلب کیا تھا، دن بھر ہونیوالی تحقیقات کے بعد رات کو چاروں افسروں کو گرفتار کرلیا گیا۔ ان افسروں کی گرفتاری سابق ڈی جی ایل ڈی اے احد چیمہ کیخلاف تحقیقات کے نتیجہ میں عمل میں آئی۔