ن لیگ کا چیئرمین نیب کیخلاف قانونی کارروائی کا فیصلہ


اسلام آباد(24نیوز)  مسلم لیگ ن کی مرکزی مجلس عاملہ کا اجلاس،  ن لیگ نے نیب کیخلاف قانون کارروائی کا فیصلہ کر لیا ، قانونی ٹیم نیب کیخلاف قانونی کارروائی کا طریقہ کار طے کرے گی۔

مسلم لیگ ن کے قائد میاں نواز شریف کی زیرصدارت پنجاب ہاؤس میں  مجلس عاملہ کا اجلاس ہوا  جس میں شہباز شریف سمیت دیگرز اہم رہنماؤں نے  شرکت کی۔ دوران اجلاس نواز شریف پر لگائے گئے الزام کی مذمت کی گئی اور فیصلہ کیا گیا کہ نیب کے چئیرمین کے خلاف قانونی کارروائی کی جائے گی۔

پڑھنا نہ بھولیں: احتساب کرنا اگر جرم ہے تو یہ جرم ہوتا رہے گا، چیئرمین نیب

ذرائع کے مطابق  نواز شریف نے چیئرمین نیب جسٹس جاوید (ر)  کی وضاحت کو مسترد کرتے ہوئے کہا کہ انتقامی کارروائیاں قابل قبول نہیں کریں گے اور کہا گیا کہ ثابت ہوچکا ہے کہ نیب جانبدارانہ کام کر رہا ہے۔انھوں نے مزید کہا کہ جسٹس جاوید نے معافی نہ مانگی تو قانونی کارروائی کریں گے۔

واضح رہے کہ 8 مئی کو چیئرمین نیب جسٹس (ر) جاوید اقبال نے سابق وزیراعظم نواز شریف اور دیگر کے خلاف مبینہ طور پر 4.9 ارب ڈالر بھارت بھیجنے کا الزام عائد کیا تھا۔

 یہ بھی پڑھیں: نگران وزیر اعظم کون؟حکومت ،اپوزیشن میں اتفاق ہوگیا

اجلاس میں احسن اقبال پرحملہ کی شدید مذمت کے ساتھ ساتھ ان کی صحت یابی کے لیے دعا بھی کرائی گئی۔ اجلاس میں ملکی سیاسی صورتحال ، نیب مقدمات اورچیئرمین نیب کے حوالے سے سیاسی او ر قانونی حکمت عملی پرغور کیاگیا۔

اجلاس سے قبل  احتساب عدالت کے کمرے میں صحافیوں سے غیررسمی گفتگو کے دوران بھی نواز شریف نے کہا کہ چیئرمین نیب کی جانب سے جاری ہونے والا اعلامیہ چھوٹا نہیں بلکہ کافی سنجیدہ معاملہ ہے اور اس سے پیچھے نہیں ہٹیں گے۔ انھوں نے کہا کہ اس سے زیادہ اب حالات کیا خراب ہوں گے، آمروں کے دور میں بھی ایسا نہیں ہوا۔

وقار نیازی

سٹاف ممبر، یونیورسٹی آف لاہور سے جرنلزم میں گریجوایٹ، صحافی اور لکھاری ہیں۔۔۔۔