مذہبی آزادی سےمتعلق امریکی رپورٹ مسترد

مذہبی آزادی سےمتعلق امریکی رپورٹ مسترد


 اسلام آباد(24نیوز) ترجمان دفتر خار جہ نے کہا  کہ مذہبی آزادی کے حوالے سے پیش کی گئی امریکی سٹیٹ ڈیپارٹمنٹ کی یکطرفہ رپورٹ جو سیاسی مقاصد کے لیے ترتیب دی گئی ہے وہ مسترد کردی گئی ہے۔ 

  تفصیلات کے مطابق دفتر خارجہ کی جانب سے جاری کیے گئے بیان میں کہا گیا ہے کہ پاکستان امریکی سٹیٹ ڈیپارٹمنٹ کی یکطرفہ اور سیاسی مقاصد کے لیے ترتیب دی گئی مذہبی آزادی کے حوالے سے رپورٹ کو مسترد کرتا ہے، تعصب پر مبنی یہ غیر ضروری رپورٹ لکھنے والوں کی غیرجانبداری کے حوالے سے کئی سوال اٹھاتی ہے، پاکستان کئی مذاہب اور تکثیری معاشرے پر مبنی ملک ہے، ہماری کل آبادی کا چار فیصد عیسائی، ہندو ،بدھ مت اور سکھ مذاہب سے تعلق رکھتی ہے ،پاکستان کا آئین مذہبی اقلیتوں کے حقوق کا تحفظ یقینی بناتا ہے۔

ترجمان دفتر خارجہ ڈاکٹر محمد فیصل کا کہنا تھا کہ قانون سازی میں ان کے حصے کو یقینی بنانے کے لیے پارلیمنٹ میں مذہبی اقلیتوں کے لیے خصوصی نشستیں مختص کی گئی ہیں، اقلیتوں کے حقوق کی خلاف ورزیوں کے ازالے کے لئے ایک متحرک اور خودمختار انسانی حقوق کا کمیشن کام کررہا ہے، پاکستان کی ہر حکومت نے آئین اور قانون کے تحت ہر موقع پر مذہبی اقلیتوں کے شہریوں کے حقوق کا تحفظ ترجیح بنایا، ملک کی اعلیٰ عدلیہ نے مذہبی اقلیتوں کی ملکیتوں اور عبادت گاہوں کے تحفظ کے لئے مثالی فیصلے کیے ہیں۔

Foreign Office rejects US State Department's unilateral & politically motivated pronouncement released in its annual religious freedom report. Foreign Office Spokesperson said #Pakistan is a multi-religious & pluralistic society where people of diverse faiths live together. pic.twitter.com/hnaYArzAOc

ان کا کہنا تھا کہ پاکستان انسانی حقوق کی 7 معاہدوں میں سے 9 میں فریق ہے،پاکستان بنیادی آزادی کے حوالے سے اپنی ذمہ داری پر عملدرآمد کی رپورٹ پیش کررہا ہے، حکومت پاکستان نے اپنے شہریوں کے حقوق کی حفاظت کے لئے بہترین قانونی اور انتظامی طریقہ کار تشکیل دیا ہے، پاکستان کو اپنی مذہبی اقلیتوں کے حقوق کے تحفظ کے لئے کسی انفرادی ملک سے کسی قسم کے مشورے یا ہدایات کی ضرورت نہیں۔

ترجمان دفتر خارجہ کا مزید کہنا تھا کہ افسوس کی بات ہے کہ انسانی حقوق پر بات کرنے والوں نے مقبوضہ کشمیر میں انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں پر اپنی آنکھوں کو بند رکھا ہوا ہے،یہ بہترین وقت ہے کہ امریکہ میں اسلام فوبیہ میں بیش بہا اضافے کی وجوہات کا غیر جانبداری سے تجزیہ کیا جائے۔