جی سی یونیورسٹی فیصل آباد کے ریسرچ گروپ کی بڑی کامیابی

جی سی یونیورسٹی فیصل آباد کے ریسرچ گروپ کی بڑی کامیابی


فیصل آباد (24 نیوز) جی سی یونیورسٹی فیصل آباد کے ریسرچ گروپ نے جہلم کے نواحی علاقے پدری سے 60 لاکھ سال پرانے گھوڑے کی باقیات دریافت کرلیں۔ اسسٹنٹ پروفیسر خضر سمیع اللہ کہتے ہیں کہ گھوڑے کی کھوپڑی کو مزید تحقیقات کیلئے چین بھیجا جائیگا تاکہ اس نسل کے معدوم ہونے کی وجوہات تلاش کی جاسکیں۔ 

جی سی یونیورسٹی فیصل آباد کے ریسرچ گروپ کی بڑی کامیابی،  جہلم کے نواحی علاقے پدری سے 60 لاکھ سال پرانے گھوڑے کی باقیات دریافت کرلی گئیں۔ اسسٹنٹ پروفیسر ڈاکٹر خضر سمیع اللہ نے اپنی ٹیم کے ہمراہ کئی روز تک جہلم کی پہاڑیوں پر جانوروں کی باقیات تلاش کرنے کیلئے کھدائی کی۔ اس دوران گھوڑے کے جبڑے اور دانت پر مشتمل باقیات ملیں۔

ڈاکٹرخضرسمیع اللہ کا کہنا تھا کہ ابتدائی تحقیقات سےمعلوم ہوا ہےکہ یہاں ساٹھ لاکھ سال پہلےگھوڑے پائے جاتے تھے، جن کا تعلق سیوا ہپس نامی خاندان سےتھا اور دانت کی ساخت بتا رہی ہے کہ یہ سخت قسم کی جنگلی گھاس کھاتے تھے۔ دریافت ہونے والی گھوڑے کی کھوپڑی کو مزید تحقیقات کیلئے چائنیز اکیڈمی آف سائنس چین بھیجا جائے گا تاکہ اسکی نسل کے معدوم ہونے کی وجوہات تلاش کی جاسکیں۔

جانوروں کی باقیات کی تلاش کرنے والے ریسرچ گروپ میں جی سی یونیورسٹی فیصل آباد کے شعبہ ذوالوجی کے پی ایچ ڈی سکالرز عمر درارز،سلیم اختر،رانا مہروزفضل شامل تھے۔

Malik Sultan Awan

Content Writer