وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی کا خالی کرسیوں سے خطاب

وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی کا خالی کرسیوں سے خطاب


لندن(24نیوز) وزیر خارجہ مخدوم شاہ محمود قریشی دو روزہ برطانیہ کا دورہ مکمل کرنے کے بعد وطن واپس لوٹ گئے، ہیتھرو ائیرپورٹ پر برطانیہ میں پاکستان کے ہائی کمشنر نفیس ذکریا اور سفارت خانے کے اعلیٰ حکام نے وزیر خارجہ کو الوداع کیا۔

 لندن میں میڈیا کی آزادی کا دفاع کرو کے زیر عنوان کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے انھوں نے کہا کہ مغربی میڈیا پاکستانی میڈیا کے حقائق کی عکاسی نہیں کرتا، جس سے آزادی اظہار اور پیمرا کی جانب سے حال ہی میں پیمرا نے نیوز چینلز کے خلاف کارروائیوں کے بارے میں اٹھنے والے سوالات کے بارے میں انھوں نے کہا کہ مغربی میڈیا حقائق کو نظر انداز کرتا ہے۔میں آپ سے کہتا ہوں کہ پاکستان کے بارے میں بین الاقوامی میڈیا کے منفی تاثرات پر توجہ نہ دیں، جو دیگر شعبوں میں پاکستان کی کامیابیوں کو نظر انداز کرتا ہے۔

صحافیوں نے ان سے میڈیا اور صحافیوں کی تنظیم کی جانب سے میڈیا پر بڑھتی ہوئی پابندیوں اور پاکستان الیکٹرانک میڈیا ریگولیٹر اتھارٹی (پیمرا) کی جانب سے مریم نواز کی تقریر سنسر کے بغیر نشر کرنے پر ٹی وی چینلز کے خلاف سخت اقدامات کے بارے میںبار بار سوالات پر شاہ محمود قریشی نے کہا کہ پاکستان میں میڈیا مکمل طورپر آزاد ہے اور میڈیا پر سنسر شپ کا دور ختم ہوچکا ہے۔  سوشل میڈیا کے رہتے ہوئے نیوز میڈیا کے پھیلائو کو روکا نہیں جاسکتا۔

ان کی تقریر کے اختتام پر کینیڈا کے ایک صحافی نے شاہ محمود قریشی سے شکایت کی کہ حکومت پاکستان نے ان کا ٹوئٹر اکائونٹ بند کرا دیا، جس پر شاہ محمود قریشی نے جواب دیا کہ ان کا اکائونٹ بند کرانے میں ان کا یا حکومت کا کوئی تعلق نہیں ہے، ٹوئٹر یا کسی اور سوشل میڈیا ادارے کی پالیسیوں پر حکومت پاکستان کاکوئی کنٹرول نہیں ہے۔ میں آپ کے مسئلے کو سمجھتا ہوں لیکن وہ ان پر غلط طورپر الزام لگا رہے ہیں۔

وزیر خارجہ کے خطاب کے دوران کرسیاں تو ہال میں موجود تھیں لیکن سسننے والے نہیں تھے۔وزیر خارجہ خالی ہال میں خطاب کرتے رہے،ان کے خالی کرسیوں سے خطاب کی وڈیو سوشل میڈیا پر وائرل ہوچکی ہے۔

اظہر تھراج

Senior Content Writer