سانحہ بارہ مئی: 12سال گزر گئے، متاثرین تاحال انصاف کےمنتظر

سانحہ بارہ مئی: 12سال گزر گئے، متاثرین تاحال انصاف کےمنتظر


کراچی (24نیوز) سانحہ بارہ مئی کو 12 سال گزر گئے مگر متاثرین تاحال انصاف کےمنتظر ہیں، اس روز کراچی میں پُرتشدد واقعات میں 50 سے زائد افراد جاں بحق اور 100 سے زائد زخمی ہوئے تھے۔ 

12 مئی 2007 ملک کی تاریخ کا سیاہ ترین دن، بارہ مئی 2007 کی صبح جب سابق چیف جسٹس پاکستان افتخار محمد چوہدری کراچی پہنچے تو کچھ عناصر کی جانب سے شہر میں جلاؤ گھیراو اور کھلی قتل و غارت گری کی گئی جس میں درجنوں کی تعداد میں عام شہری شہید ہوئے ۔ اس افسوس ناک واقعے کو یاد کر کے وکلا آج بھی غمزدہ ہیں۔

دوسری جانب ایم کیو ایم رہنما ڈاکٹر فاروق ستار سانحہ بارہ مئی کے سب زیادہ متاثرہ فریق اپنی ہی جماعت کو قرردیتے ہیں۔ ان کا کہنا ہے کہ سانحہ بارہ مئی اور دیگر سانحات کی شفاف تحقیقات کرائی جائیں تاکہ اصل کرداروں کو سامنے لایا جاسکے۔

سانحہ بارہ مئی سے متعلق درج 16 مقدمات میں مئیر کراچی وسیم اختر سمیت 40 سے زائد ایم کیوایم کارکن نامزد ہیں، وسیم اختر سمیت 21 ضمانت پر جبکہ 16 ملزمان کو عدالت اشتہاری قرار دے چکی ہے، سانحہ سے متعلق درج 4 مقدمات میں فردجرم بھی عائد ہوچکی ،، مگر چھ ماہ سے سرکارکی جانب سے کیس میں کوئی گواہ ہی پیش نہیں کیا گیا ۔

سٹاف ممبر، یونیورسٹی آف لاہور سے جرنلزم میں گریجوایٹ، صحافی اور لکھاری ہیں۔۔۔۔