ایم کیو ایم پاکستان کے بہادر آباد, پی آئی بی گروپ میں قانونی جنگ

ایم کیو ایم پاکستان کے بہادر آباد, پی آئی بی گروپ میں قانونی جنگ


کراچی(24نیوز) ایم کیو ایم پاکستان کے بہادر آباد اور پی آئی بی گروپ میں قانونی جنگ چھڑگئی۔ بیرسٹر فروغ نسیم کہتے ہیں رابطہ کمیٹی کسی کوبھی سینیٹ کا ٹکٹ دے سکتی ہے۔ خالد مقبول صدیقی کا کہنا ہے کہ انتخابی سیاست سے پیسے اور وسائل کو مائنس کردیا ہے۔

خالد مقبول صدیقی کا کہنا ہے کہ پوری رابطہ کمیٹی ایک طرف  فاروق ستار ایک طرف۔ سینیٹ کے انتخابات کے لیئے ناموں کا معاملہ پرانہ ہو گیا ہے۔ اب بات آگئی ہے کہ ایم کیوایم پاکستان کس کی ملکیت ہے؟

دونوں دھڑوں میں قانونی جنگ کا آغاز ہوگیا۔ بیرسٹر فروغ نسیم نے دعوے کیا کہ ایم کیو ایم فاروق ستارکے نام سے رجسٹرڈ نہیں رابطہ کمیٹی جس کو چاہیئے سینٹ کا ٹکٹ دے سکتی ہے اور کسی کو بھی فارغ کرنے کا اختیار رکھتی ہے۔

ادھر رابطہ کمیٹی کے نو منتخب کنوینر اور پارٹی کے سربراہ ڈاکٹر خالد مقبول صدیقی کا کہنا ہے ہمارے خلاف قانونی کارروائی ہونا ضروری ہے تاکہ وحاضت ہو کہ آئینی طور پر کون کس کو نکال سکتا ہے۔

ہم نے انتخابی سیاست سے پیسے اور وسائل کو مائنس کر دیا ہے۔ دوسری جانب بہادر آباد اور پی آئی بی گروپ کی جانب سے قانونی مشاورت کی جارہی ہے اور مختلف پہلوں سے معاملہ کا جائزہ لیا جارہا ہے۔