اسٹیٹ بینک:نئے قرضے دینے کی بجائے پرانے قرضوں کی وصولی شروع


اسلام آباد(24نیوز) کمرشل بینکوں نے حکومت کو قرض دینے کی بجائے پرانے قرضوں کی وصولی شروع کر دی،جنوری میں نیا قرض دینے کی بجائے 9 کھرب روپے سے زائد کی وصولیاں کیں۔

اسٹیٹ بینک کےمطابق جنوری کے دوران کمرشل بینکوں نے حکومت کو نئے قرضے دینے کی بجائے مجموعی طور پر 9 کھرب 4 ارب 49 کروڑ روپے کے پرانے قرضوں کی وصولی کی۔ جس کے باعث حکومتی بانڈز اور بلز میں بینکوں کی سرمایہ کاری کا حجم 10.6 فیصدکمی سے 76 کھرب 37 ارب 3 کروڑ 50 لاکھ روپے رہ گیا۔گزشتہ سال جنوری میں بینکوں کی طرف سے حکومتی پیپرز میں 140 ارب 52 کروڑ روپے کی نئی سرمایہ کاری کی گئی تھی۔

رپورٹ کے مطابق جنوری کے دوران بینکوں کے ڈپازٹس کے حجم میں بھی تقریباً 4 کھرب روپے کی کمی رکارڈ کی گئی۔ تاہم نجی شعبے کو دئیے جانے والے قرضوں میں 26 ارب 18 کروڑ روپے کا اضافہ دیکھا گیا اور ان کا حجم 65 کھرب 56 ارب 14 کروڑ روپے کی بلند ترین سطح پر پہنچ گیا۔ گزشتہ سال جنوری میں بینکوں نے نجی شعبے کو نئے قرض دینے کی بجائے 104 ارب روپے کی وصولیاں کی تھیں۔