موسمی انفلوئنزا ایک کے بعد ایک جان نگلنے لگا


ملتان(24نیوز) موسمی انفلوئنزا انسانی جانیں نگلنے لگا، بہاولپور کے وکٹوریہ اسپتال میں 25 سالہ صائمہ چل بسی، بہاولپور میں موذی وائرس سے ہلاکتوں کی تعداد 9 ہوگئی، نشتر اسپتال میں ہلاک ہونے والے مریضوں کی تعداد 45 تک جا پہنچی، پنجاب میں مجموعی طور پر 69 لوگ وائرس کے ہاتھوں جان کی بازی ہار چکے ہیں۔

تفصیلات کے مطابق محکمہ صحت جنوبی پنجاب میں انفلوئنزا پر قابو پانے میں ناکام ہے۔ بہاولپور کے وکٹوریہ اسپتال میں 25 سالہ صائمہ بی بی وائرس میں مبتلا ہوکر زندگی کی بازی ہار گئی۔ سیزنل انفلوئنزا سے ملتان کے نشتر اسپتال میں اب تک 45 افراد جاں بحق ہوچکے ہیں۔ اسپتال میں اب بھی 5 مریض زیر علاج ہیں۔ جن میں سے 4 افراد میں وائرس کی تصدیق ہو چکی ہے۔ 3 افراد کو انتہائی نگہداشت کے وارڈ میں رکھا گیا ہے۔

دوسری جانب جنوبی پنجاب میں جان لیوا بیماری سے ہلاکتوں کی تعداد 57 ہوگئی۔ بڑے پیمانےپر ہلاکتوں کے باوجود حکومت پنجاب کی جانب سے مرض پر قابو پانے کیلئے کوئی خاطر خواہ اقدامات سامنے نہیں آئے۔جس پر مریض اور ان کے لواحقین نے تشویش کا اظہار کیا ہے۔