سپریم کورٹ نے شیخ رشید کو اہل قرار دیدیا


اسلام آباد(24نیوز) مسلم لیگ ن کیلئے ایک اور شکست ان کا مقدر بنی، سپریم کورٹ نے شیخ رشید کو اہل قرار دے دیا۔
سپریم کورٹ نے بڑا فیصلہ سنا دیا، سپریم کورٹ نے ن لیگ کے شکیل اعوان کی شیخ رشید کے خلاف نا اہلی کی درخواست مسترد کردی۔فیصلہ سناتے ہوئےشیخ رشید کو اہل قرار دیدیا ۔جسٹس عظمت سعید، جسٹس قاضی فائز عیسیٰ اور جسٹس سجاد علی شاہ پرمشتمل تین رکنی بینچ کا فیصلہ دو ایک سے سامنے آیا ۔فیصلہ میں جسٹس قاضی فائز عیسی نے اختلافی نوٹ دیا۔
شیخ رشید نے کہااللہ نے آج بھی مجھے عزت دی ہے، میں نے کبھی کوئی غلط کام نہیں کیا، میں بڑا مسکین اور عام آدمی ہوں،انھوں نے کہا  شہبازشریف میں آرہا ہوں، قبضہ گروپ کے لئے شیخ رشیدسیاسی موت ثابت ہوگا، جومیری سیاسی موت دیکھ رہے تھے ان کی سیاسی زندگی چاہتا ہوں۔ شیخ رشید نے مزید کہا کہ میرے فیصلے پرراولپنڈی میں کروڑوں کاجوا لگایا گیا۔

پڑھنا مت بھولیں: شریف خاندان کا نام ای سی ایل میں ڈالا جائیگا یا نہیں، فیصلہ آج ہوگا

دوسری جانب  شیخ رشید کی نااہلی کے لیے سپریم کورٹ سے رجوع کرنے والے (ن) لیگی رہنما شکیل اعوان کا کہنا ہے کہ  انصاف کے حصول کے لئے عدل کا ہر دروازہ کھٹکھٹائیں گے۔ انھوں نے کہا کہ شیخ رشید کی غلطی تسلیم کرنے کے باوجود اس طرح کا فیصلہ آیا جس سے ثابت ہوتا ہے کہ پاکستان میں انصاف کا حصول کتنا مشکل ہے۔

ن لیگ کے رہنما شکیل اعوان نے عوامی نمائندگی ایکٹ کے تحت شیخ رشید کی نا اہلی مانگی تھی اور

یاد رہے کہ شیخ رشید کی نا اہلی کے خلاف درخواست ن لیگ کے رہنما شکیل اعوان نے دائر کی تھی جس میں شیخ رشید  2013 کے انتخابات کے کاغذات نامزدگی میں اثاثے چھپانے کا الزام عائد کیا گیا تھا۔شکیل اعوان نےموقف اختیار کیا تھا کہ  شیخ رشید نے 1 ہزار 81 کنال زمین کو انتخابی گوشواروں میں 968 کنال ظاہر کی۔ن لیگ کے رہنما شکیل اعوان کی جانب سے دائر درخواست کی سماعت جسٹس شیخ عظمت سعید کی سربراہی میں 3 رکنی بنچ نے کی تھی۔ عدالت نے  20 مارچ کو فریقین کے دلائل سننے کے بعد فیصلہ محفوظ کیا تھا جو  آج 85 دنوں بعد سنایا گیا ہے۔

وقار نیازی

سٹاف ممبر، یونیورسٹی آف لاہور سے جرنلزم میں گریجوایٹ، صحافی اور لکھاری ہیں۔۔۔۔