قومی اسمبلی اجلاس:ایسا کیا ہوا کہ سپیکر ایاز صادق واک آوٗٹ کر گئے؟


اسلام آباد(24نیوز)قومی اسمبلی اجلاس میں چیئرمین سینیٹ کے انتخاب کا معاملہ گرم رہا، کیپٹن صفدر بولے کہ ذوالفقار علی بھٹو کا نظریہ کسی ایسے شخص کے پاس نہیں ہوناچاہیےجو کسی اورکے قدموں میں بیٹھ جائے۔ شازیہ مری نے کہا کہ ضیاءکی قبر پر پھول چڑھانے والے بھٹو کی بات کر رہے ہیں۔
قومی اسمبلی کا اجلاس اسپیکر ایاز صادق کی زیر صدارت ہوا۔سینیٹ انتخابات میں مبینہ ہارس ٹریڈنگ پر بات کرتے ہوئے پختونخواہ ملی عوامی پارٹی کے محمود اچکزئی نے کہا کہ سینیٹ انتخابات میں زر اور زور سے ملک کی بنیادیں ہلا دی گئیں۔ بلوچستان حکومت تبدیل کرنے والوں کو منظر عام پر لایا جائے۔

یہ بھی پڑھئے: دانیال عزیز کی شامت آگئی،سپریم کورٹ نے بڑا فیصلہ سنادیا 
ن لیگ کے کیپٹن ریٹائرڈ صفدر نے کہا کہ ذوالفقار بھٹو کا نظریہ انہیں اپنے پاس رکھنا چاہئے۔ یہ نظریہ کسی ایسے شخص کے پاس نہیں ہونا چاہئے جو کسی کے قدموں میں بیٹھ جائے،پیپلز پارٹی کی شازیہ مری نےاس پرکہا کہ سینیٹ الیکشن میں منہ کی کھانے والے سینیٹ کا منہ کالا کرنے کی بات کر رہے ہیں،آج بھٹو کی بات کرنے والے کل ضیاءالحق کی قبر پر پھول چڑھاتے رہے ہیں۔
حلقہ بندیوں پر اعتراضات دور کرنے کے لئے قومی اسمبلی میں کمیٹی قائم کردی گئی،جس کے بعدقومی اسمبلی کا اجلاس بدھ صبح ساڑھے دس بجے تک ملتوی کردیا گیا۔

پڑھنا نہ بھولئے: نواز شریف اور ساتھی محفوظ،عمران خان پھنس گئے 
دلچسپ چیز کو دیکھنے میں آئی وہ یہ تھی کہ اجلاس کے دوران وزارت داخلہ کا کوئی نمائندہ موجود نہ ہونے پر اسپیکر برہم ہو گئے، وزیر داخلہ اورسیکرٹری داخلہ کی عدم حاضری پر اسپیکر نے احتجاجاً چیئر چھوڑ دی اور ڈپٹی چیئرمین کے حوالے کردی۔