میکسیکو کی ریاست چیاپاز کے لوگ مسلمان کیسے ہوئے؟

میکسیکو کی ریاست چیاپاز کے لوگ مسلمان کیسے ہوئے؟


میکسیکو (24نیوز) میکسیکو کی ریاست چیاپاز میں اسلام جڑیں پکڑ چکا،یہاں اسلام سپین کے راستے 1990 کی دہائی میں پہنچا،ابرہیم پیش امام نے کہا کہ وہ پندرہ برس کی عمر میں مسلمان ہوا۔

تفصیلات کے مطابق میان کے اہم خطے میں مسلمانوں کی اذان حیرت انگیز لگتی ہے،وہاں کی پیشتر آبادی مسیحی ہے، میکسیکو کی جنوبی ریاست چیاپاز  میں اسلام جڑیں پکڑ چکا،وہاں کے ایک شخص ابرہیم پیش امام ہیں،عیسائیت کی طرح اسلام بھی سپین کے راستے یہاں پہنچا،ابرہیم پیش امام کاکہناتھا کہ میں 15سال کی عمر میں مسلمان ہوا۔

اپنے خاندان کا پہلا فرد تھا جو مسلمان ہوا،مجھے نہیں معلوم تھا کہ اسلام کیا ہے؟ میکسیکو پر 16ویں صدی میں سپین نے قبضہ کیا،مسیحوں کےکیتھولک فرقے نے پورے ملک میں تبلیغ کی،1990 کی دہائی میں مسلمان سپین کے راستے سے یہاں پہنچے،ان کا کہناتھا کہ مجھے اتنا یاد ہے اس وقت ہر طرف لوگ بیٹھے ہوئے تھے اور وہ کچھ گارہے تھے جس کو میں سمجھ نہیں سکا۔

اس منظر نے مجھے متوجہ کیا،میں نے اپنے والدین اور سب دوستوں کو بلایا اور وہ سب مسلمان ہوگئے،اور اس طرح ایک مسلمان کمیونٹی وجود میں آئی،ابرہیم پیش امام کا کہناتھا کہ ہم آپ کو بھی اپنی جماعت میں دعوت دیتے ہیں، میکسیکو کےاس خطے میں چار منفرد مسلم  گروہ ہیں، اور وہ اسلامی تہوار منارہے ہیں،مسلم کمیونٹی 200 نفوس پر مشتل ہے۔

ان کا مزید کہناتھا کہ ہم چاہتے ہیں کہ آپ مسلم کمیونٹی میں خوشیاں لائیں خاص کر ان علاقوں میں جو حملوں کی زدہ میں ہیں،ہم دروازے کھلے رکھتے ہیں تاکہ دوسرے لوگ اسلام کے بارے جانیں، اور دیکھیں کہ مسلمان ہونے کا کیا مطلب ہے۔