ٹرمپ سے ملاقات کڑوی گولی ہے، لیکن نگلنا پڑے گی: عمران خان


اسلام آباد (24نیوز) پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے چیئرمین عمران خان کا کہنا تھا کہ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ سے ملاقات کڑوی گولی ہوگی مگر نگلنا پڑے گی۔

تفصیلات کے مطابق حال ہی میں امریکی خبر رساں ادارے کو دیے گئے ایک انٹرویو میں عمران خان کا کہنا تھا کہ اگر انتخابات کے بعد وزیر اعظم منتخب ہوا تو آئندہ برس 2019 میں امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ سے ملاقات کروں گا، عمران خان نے انٹرویو میں امریکی صدر کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ ان سے ملاقات کڑوی گولی تو ہوگی لیکن کرنا پڑے گی ۔

ان کا کہنا تھا کہ ٹرمپ کاٹوئٹ انتہائی توہین آمیز تھا،جس طرح امریکا نے پاکستان سے برتاؤ کیا وہ درست نہیں حلانکہ دہشت گردی کےخلاف جنگ میں پاکستان کو کوئی لینا دینا نہیں تھا۔

گفتگو کے دوران ایک سوال پر عمران خان کا کہنا تھا کہ امریکا پر 9/11 حملوں کے بعد دہشت گردی کے خلاف جنگ میں پاکستان نے اہم کرادر ادا کیا ہے ،ان کا کہنا تھا کہ ٹرمپ طالبان کو شکست دینے اور افغانستان میں امن قائم کرنے پر ناکامی برداشت کر رہا جو ’ایک بڑی بے عزتی کی بات ہے‘۔

پی ٹی آئی چیئرمین کا کہنا تھا کہ ٹرمپ نے پاکستان کو قربانی کا بکرا بنایا جب کہ پاکستان کسی دہشت گردی میں ملوث نہیں وہ خود خاتمہ چاہتا ہے، دوسری جانب عمران خان کا دینی مدرسوں کے حوالے سے کہنا تھا کہ ہم لاکھوں مدرسوں کو قومی دھارے میں لائیں گے۔

انہوں نے بتایا کہ میں چاہتا ہوں کہ مدرسہ گریجوئیشن طلبا کے پاس تمام صلاحیتیں ہوں تاکہ وہ کسی بھی شعبہ میں با آسانی ملازمتیں حاصل کرسکیں۔