سابق چیئرمین ای او بی آئی ظفر گوندل سینیٹ کی قائمہ کمیٹی میں پیش ہوگئے

سابق چیئرمین ای او بی آئی ظفر گوندل سینیٹ کی قائمہ کمیٹی میں پیش ہوگئے


اسلام آباد(24نیوز)20 ارب کی میگا کرپشن سکینڈل معاملے پر سابق چیئرمین ای او بی آئی ظفر گوندل سینیٹ کی قائمہ کمیٹی میں پیش ہوگئے کہا کہ پراپرٹی کی خریداری میں کرپشن کا الزام بے بنیاد ہے کوئی بھی پراپرٹی لائیں بحث کرنے کو تیار ہوں زمین کی خریداری میں پورے بورڈ کا کردار ہے۔
تفصیلات کے مطابق سینیٹ کی قائمہ کمیٹی سمندر پار پاکستانیوں کا اجلاس سعید مندوخیل کی زیر صدارت ہوا،، اجلاس میں ای او بی ائی میں 20 ارب کی میگا کرپشن سکینڈل معاملے پرسینیٹ کمیٹی کے طلب کرنے پر سابق چیئرمین ای او بی آئی ظفر گوندل کمیٹی میں پیش ہوئے، ظفر گوندل نے کہا کہ پراپرٹی کی خریداری میں کرپشن کا الزام بےبنیاد ہے کوئی بھی پراپرٹی لائیں بحث کرنے کو تیار ہوں جو پراپرٹی خریدی اس دن کے ریٹ پر لی گئی ظفر گوندل نے یہ بھی کہا کہ ہمارے دور میں جو جائیدادیں خریدی گئیں وہ موجود ہیں۔
چیئرمین ای او بی آئی نے کہا کہ جائیدادیں انوسٹمنٹ کمیٹی کی سفارشات پر خریدی گئیں۔۔ انوسٹمنٹ کمیٹی 50 لاکھ تک پراپرٹی کی منظوری دے سکتی ہے۔ انوسٹمنٹ کمیٹی نے اربوں روپے کی پراپرٹی خریدی ایف آئی اے معاملے کی انکوائری۔انوسٹمنٹ کمیٹی پر پرچے ہوچکے ہیں 18 پراپرٹیز قوائد و ضوابط سے ہٹ کر خریدی گئیں اور تمام پراپرٹیز بورڈ کی منظوری کے بغیر خریدی گئیں اور سپریم کورٹ میں پراپرٹی فروخت کرنے والے نے تسلیم کیا کہ 29 کروڑ کیک بیکس دیئے گئے ظفر گوندل نے کہا کہ زمین کی خریداری میں چیئرمین ای او بی آئی کا کردار نہیں ہوتا، چیئرمین فقط بورڈ کا ایک رکن ہوتا ہے، وہ کوئی فیصلہ نہیں کر سکتے، زمین کی خریداری میں پورے بورڈ کا کردار ہے۔
چیئرمین ای او بی آئی نے کہا کہ سرینا ہوٹل اسلام آباد میں بھی بے قائدگیاں سامنے آئی ہیں، سرینا کے معاہدے میں بھی قانونی تقاضے پورے نہیں کئے گئے سرینا کے ساتھ ایک آپریٹر معاہدہ کیا گیا تاہم سرینا معاہدے سے ای او بی آئی کو کوئی مالی فائدہ نہیں چیئرمین ای او بی آئِی نے یہ بھی کہا کہ سرینا ہوٹل فور اسٹار ہوٹل بننا تھا لیکن بغیر منظوری کے فائیو اسٹار بنا لیا گیا، ہوٹل کا فور میں سے فائیو اسٹار ہوٹل بن جانا بھی قانون کی خلاف ورزی ہے جس پر ظفر گوندل نے کہا کہ سرینا کا پی سی ون موجود تھا، کنونیئر کمیٹی سعید مندوخیل نے میڈیا سے گفتگو میں کہا کہ ظفر گوندل اور چیئرمین ای او بی آئی دونوں کا موقف سنا ہے۔۔اس پر بیٹھ کر اپنا نقطہ نظر تیار کریں گے ظفر گوندل کا موقف سنا ساری چیزیں غلط ہیں نہ درست ای او بی آئی سے متعلق کچھ معاملات سپریم کورٹ میں ہیں سزا دینا سپریم کورٹ کا کام ہے کمیٹی ای او بی آئی پر اپنی سفارشات دیگی جبکہ ای او بی آئی سکینڈل سے متعلق تمام ریکارڈ طلب کر لیا ہے۔