سعودی عرب کا جوہری پروگرام کے حوالے سے بڑااقدام، امریکہ سے رابطہ

سعودی عرب کا جوہری پروگرام کے حوالے سے بڑااقدام، امریکہ سے رابطہ


ریاض (24 نیوز) سعودی عرب کے سرکاری ذرائع ابلاغ کے مطابق ملک کی کابینہ نے اپنے جوہری توانائی کے پروگرام کی قومی پالیسی منظور کر لی ہے۔

تفصیلات کے مطابق سعودی عرب اپنے پہلے جوہری بجلی گھروں کے لیے معاہدوں کی تیاری کر رہا ہے۔ یہ پالیسی جوہری پروگرام کو پُر امن مقاصد کے لیے محدود کرنے، ریڈیائی فاضل مادے کو ٹھکانے لگانے کے بہترین اقدامات کرنے اور حفاظتی اقدامات پر زور دیتی ہے۔

یہ بھی پڑھئے: شام میں خانہ جنگی کے 7 سال مکمل، کب، کیا ہوا؟ 

سعودی عرب معدنی تیل برآمد کرنے والے بڑے ممالک میں شامل ہے۔ تاہم وہ اب تیل کی درآمد میں اضافہ کے لیے بجلی پیدا کرنے کے متبادل ذرائع بھی تلاش کر رہا ہے۔

ذرائع کے مطابق محمد بن سلمان 19 سے 22 مارچ تک امریکہ کا دورہ کر رہے ہیں اور توقع ظاہر کی جا رہی ہے کہ واشنگٹن کے ساتھ سویلین جوہری تعاون کے معاہدہ کی کوشش کریں گے۔

خیال رہے کہ سعودی عرب نے آئندہ دو دہائیوں میں 16 جوہری ری ایکٹرز کی تعمیر کی کوششیں تیز کر دی ہیں۔ ماہرین اور حکام کے مطابق اس پر 80 ارب ڈالر لاگت آئے گی۔