سپریم کورٹ : زینب قتل کیس از خود نوٹس کی سماعت، آئی جی پنجاب پیش نہ ہوئے

سپریم کورٹ : زینب قتل کیس از خود نوٹس کی سماعت، آئی جی پنجاب پیش نہ ہوئے


اسلام آباد(24نیوز) زینب قتل کیس ازخود نوٹس کی سماعت آج سپریم کورٹ میں ہوئی، آئی جی پنجاب مصروفیت کے باعث عدالت میں پیش نہ ہوسکے، چیف جسٹس نے ریمارکس میں کہا پوری قوم زینب کے قتل پر غمزدہ ہے، عدالت نے آئندہ سماعت پر تحقیقاتی ٹیم اور پنجاب فرانزک کے سربراہ کو طلب کرلیا۔

زینب قتل کیس ازخود نوٹس کیس کی سماعت چیف جسٹس کی سربراہی میں تین رکنی بینچ نے کی، آئی جی پنجاب مصروفیت کے باعث عدالت میں پیش نہ ہوسکے۔

چیف جسٹس نے ریمارکس میں کہا کہ ہم نے کہا تھا اگر آئی جی صاحب مصروف ہوں تو کسی اور کو بھیج دیں، پوری قوم زینب کے قتل پر غمزدہ ہے، اگر آپ یہاں کچھ نہیں بتانا چاہتے تو چیمبر میں بتا دیں۔

چیف جسٹس کا کہنا تھا کہ زینب سے زیادتی کرنے والا سیریل کلر ہے، ملزم گرفتار ہونا چاہئے، عدالت نہیں چاہتی کہ ملزم مقابلے میں مارا جائے، اگر مسئلہ حل نہ ہوا تو یہ پولیس اور حکومت کی بڑی ناکامی ہوگی، ایڈیشنل آئی جی نے کہا کہ گرفتاری کیلئے کوئی ڈیڈلائن نہیں دے سکتے، چیف جسٹس نےکہا سیف سٹی منصوبے پر کروڑوں روپے خرچ کرنے کا کیا فائدہ؟ سرکاری وکیل نے بتایا کہ 1100مشکوک افراد سے تفتیش کی گئی، 400 افراد کے ڈی این اے ٹیسٹ کیلئے نمونے لئے گئے۔

عدالت نے سماعت ملتوی کرتے ہوئے تحقیقاتی ٹیم سمیت پنجاب فرانزک کے سربراہ کو آئندہ سماعت پر طلب کرلیا، سماعت اتوار کو لاہور رجسٹری میں ہوگی۔