الیکشن کمیشن کا پی ٹی ائی سے انٹراپارٹی انتخابات کے ووٹوں کی تفصیل طلب


اسلام آباد(24نیوز) الیکشن کمیشن تحریک انصاف کے انٹرا پارٹی انتخابات کو کالعدم قرار دینے کی درخواست پر فیصلہ ایک بار پھر نا سنا سکا،تحریک انصاف سے انٹراپارٹی انتخابات میں پڑنے والے ووٹوں کی مکمل تفصیل طلب کر لی۔

تفصیلات کے مطابق چیف الیکشن کمیشن کی سربراہی میں 5 رکنی کمیشن نے مختلف کیسوں کی سماعت کی۔ الیکشن کمیشن نے پی ٹی آئی کی جانب سے انٹراپارٹی انتخابات کیس میں جمع کرائی گئی تفصیلات کو نامکمل قرار دیا اور پی ٹی آئی سے 24 جنوری تک دونوں پینلز کو پڑنے والے ووٹوں کی مکمل تفصیلات طلب کر لی۔ الیکشن کمیشن نے آج انٹراپارٹی انتخابات کیس میں فیصلہ سنانے کا اعلان کر رکھا تھا۔تحریک انصاف کو غیرملکی فنڈنگ کیس میں الیکشن کمیشن نے درخواستگزار اکبر ایس بابر کے وکیل کی اضافی دستاویزات جمع کرانے کی استدعا مسترد کر دی۔درخواستگزار نے استدعا کی تھی کہ تحریک انصاف کو بحرین،سعودی عرب ،ڈنمارک اور قطر سے ممنوعہ ذرائع سے فنڈنگ ہوئی ہے جسے پی ٹی آئی نے اپنی تفصیلات میں ظاہر نہیں کیا۔جس پر پی ٹی آئی کے سیکرٹری مالیات نے کہا کہ درخواستگزار مفروضوں پر بات کر رہے ہیں جب ان سے تفصیلات شیئر نہیں کی گئی تو ان کو کیسے معلوم ہے کہ ہم نے مکمل تفصیلات نہیں دی۔جس پر چیف الیکشن کمشنر نے کہا عدالتی حکم امتناع کے بعد تحریک انصاف کے تمام اکاونٹس کی چھان بین ہو گی۔کیس کی سماعت اسلام آباد ہائیکورٹ میں معاملہ زیرالتوا ہونے کے باعث 7 فروری تک ملتوی کر دی۔

دوسری جانب تحریک انصاف کے سیکرٹری مالیات نے تمام سیاسی جماعتوں کے اکاونٹس کے چھان بین کی درخواست واپس لے لی۔سردار اظہر طارق نے کہا سپریم کورٹ تمام سیاسی جماعتوں کے اکاونٹس کی چھان بین کا حکم دے چکی ہے اس لیے درخواست کی کوئی اہمیت نہیں۔ الیکشن کمیشن نے علیم خان کے خلاف این اے 122 کے ضمنی انتخاب میں جعلی حلف نامے جمع کرانے کا کیس لاہور ہائیکورٹ میں زیر التوا ہونے کے باعث بغیر کسی کاروائی کے 19 فروری تک ملتوی کر دی۔