ملک میں پٹرول اور ڈیزل کا شدید بحران پیدا ہونے کا خدشہ

اسلا آباد (24نیوز) پی ایس او سخت مالی مشکلات کا شکار،پی ایس او کا گردشی قرضہ 306 ارب کی سطح تک پہنچ گیا ،اگر ادائگیاں نہ کی گئیں تو پی آئی اے اور دیگر اداروں کو تیل کی سپلائی بند کر دی جائے گئی۔


تفصیلات کے مطابق ملک میں پٹرول اور ڈیزل کا بحران پیدا ہونے کا خدشہ ،پی ایس او کا گردشی قرضہ 306 ارب کی ریکارڈ سطح تک جا پہنچ 24نیوز نے پی ایس او کے گردشی قرضے کی مکمل تفصیلات حاصل کر لیں جس کے مطابق سرکاری تھرمل پاور پلانٹس نے پی ایس او کے 155 ارب 40 کروڑ ادا کرنے ہیںحبکو 81 ارب 60 کروڑ جبکہ کوٹ ادو پاور کمپنی 35 ارب کی نادہندہ ہے ،پی آئی اے نے 25 ارب 30کڑور کے واجبات ادا کرنے ہیں جو تاحال نہیں دیے جا سکے۔

پی ایس او حکام کا کہنا تھا کہ اگر پی آئی آے نے اگر رقم ادا نہ کی تو جہازوں کو مکمل ایندھن کی فراہمی بند کر دی جائے گئی یاد رہے کہ دو دن قبل بھی تیل روکے جانے پر پی آئی آئے کا آپریشنل فلائٹ کا نظام متاثر ہوا تھا دوسری طرف سوئی نادرن نے ایل این جی کی مد میں پی ایس او کے 4 ارب 60 کروڑ دینے ہیں۔

پی ایس او نے وزارت خزانہ اور وزیراعظم کو گھمبیر صورتحال سے خط لکھ کر آگاہ بھی کر دیا ،خط کے متن کے مطابق تیل درآمد کرنے کے لیے فوری طور پر رقم کی ادائیگی کی جائے،واجبات کی ادائگیاں نہ کی گئیں توایندھن کی سپلائی معطل ہو جائے گئی جبکہ عالمی منڈی سے تیل کے مزید سودوں کے لیے بینکوں نے بھی قرض دینے سے انکار کر دیا گیا ہے۔