وزیراعظم کی کابینہ میں اختلافات، ٹیکس ایمنسٹی سکیم موخر کردی گئی

وزیراعظم کی کابینہ میں اختلافات، ٹیکس ایمنسٹی سکیم موخر کردی گئی


اسلام آباد( 24نیوز ) ایمنسٹی سکیم کےمعاملےپروفاقی کابینہ تقسیم، ٹیکس ایمنسٹی سکیم کی منظوری موخرکردی گئی،سوال یہ ہے کہ ٹیکس ایمنسٹی کسے دی جائے؟ اور کسے نہ دی جائے؟ ایمنسٹی لینے والوں پرکتنا ٹیکس لگایا جائے؟ اور جائیداد کی مالیت کیا مقرر کی جائے؟ 

تفصیلات کے مطابق ٹیکس ایمنسٹی سکیم وفاقی کابینہ میں اختلافات کی وجہ سے موخر کردی گئی، کابینہ اجلاس  میں ایف بی آر نے ٹیکس ایمنسٹی سکیم پر مختلف تجاویز پیش کیں، وزیر اعظم عمران خان نے باہمی مشاورت سے ٹیکس ایمنسٹی سکیم پر مزید غور کرنے کی ہدایت کی تاکہ اس مسئلہ کو حل کیا جائے، ٹیکس ایمنسٹی سکیم کے ریٹس اور جائیداد کی ویلیو پر اختلاف ہے۔

ایف بی آر نے کابینہ اجلاس میں ٹیکس ایمنسٹی سکیم پر مختلف تجاویز پیش کیں، اثاثے ڈیکلریشن سکیم کو آرڈیننس کی شکل میں صدر مملکت کو بھجوادیاجائیگا،صدرمملکت سےمنظوری ملتےہی آرڈیننس جاری ہوجائیگا اور سکیم پرعملدرآمدکا آغاز ہوجائیگا،اثاثے ڈیکلریشن سکیم سے 30 جون تک فائدہ اٹھایا جاسکے گا۔

ذرائع کا کہنا تھا کہ ٹیکس ایمنسٹی کسے دینی ہے اور کسے نہیں؟ اس پر بھی اعتراضات اٹھائے گئے ہیں، کراچی کے ایک کاروباری شخص نے کہا کہ سیاست دانوں کے بیوی بچوں اور بہن بھائیوں پرپابندی نہ لگائی جائے، وفاقی کابینہ نے وزیر خزانہ اسد عمر کی سربراہی میں کمیٹی قائم کردی ہے۔

M.SAJID KHAN

CONTENT WRITER