جناح ہسپتال میں چیف جسٹس کی آمد، سہولتوں کا فقدان، تحریری جواب طلب


 کراچی(24نیوز) چیف جسٹس آف پاکستان جسٹس ثاقب نثار کا کراچی میں جناح اسپتال کا دورہ۔ مریضوں نے چیف جسٹس کے سامنے شکایات کے انبار لگا دیئے۔ انہوں نے سہولیات کے لئے حکام سے تحریری جواب بھی طلب کرلیا۔ اس سے قبل چیف جسٹس نے سپریم کورٹ کراچی رجسٹری میں سرکاری اسپتالوں کے حوالے سے سماعت کی سربراہی بھی کی۔

تفصیلات کے مطابق کراچی کے جناح ہسپتال کا چیف جسٹس آف جسٹس ثاقب نثار نے دورہ کیا۔ ہسپتال انتظامیہ کی جانب سے چیف جسٹس کو مختلف وارڈز کا دورہ کرایا گیا۔ چیف جسٹس نے مریضوں سے ملاقات بھی کی۔

مریضوں کے تیمارداروں نے چیف جسٹس کو اپنے درمیان پایا تو شکایتوں کے انبار لگا دیئے۔ مریضوں کے اہلِ خانہ نے موقف اپنایا کہ جناح ہسپتال کی ایمرجنسی میں اگر سفارشات ہوں تو مریض کی اچھی دیکھ بھال کی جاتی ہے۔ چیف جسٹس نے عملے کو غفلت برتنے پر ڈانٹ بھی دیا۔

 سیمی جمالی نے اپنی بریفنگ میں کہا کہ جناح ہسپتال کی ایمرجنسی اس وقت بہترین سہولیات سے لیس ہے۔ چیف جسٹس نے کہا کہ ایمرجنسی وارڈ میں بدبو آرہی ہے۔

چیف جسٹس نے ڈائریکٹر جناح ہسپتال ڈاکٹر سیمی جمالی کو حکم دیا کہ مجھے آپ لکھ کر دیں کہ ہسپتال میں کیا سہولیات موجود نہیں ہیں۔ اس سے قبل سپریم کورٹ کراچی رجسٹری میں جناح ہسپتال سمیت سندھ کے دیگر سرکاری ہسپتالوں کی حالتِ زار کے حوالے سے سماعت ہوئی۔ چیف جسٹس نے حکم دیا کہ سرکاری ہسپتالوں میں تمام سہولیات اور انسنیٹرز فعال ہونے چاہیئے۔