گوادر کول پاور پراجیکٹ کھٹائی میں پڑ گیا

گوادر کول پاور پراجیکٹ کھٹائی میں پڑ گیا


گوادر (24نیوز)  بلوچستان حکومت نے ماحولیاتی اثرات کے اعتراضات لگا کر گوادر کول پاور پلانٹ منصوبہ روک لیا۔ وفاقی حکومت کی سفارشات کو بھی مسترد کردیا گیا ۔

گوادر میں سی پیک کے تحت لگنے والے 300 میگا واٹ کے کول پاور پلانٹ کو بریکیں لگ گئیں۔ منصوبہ پر بلوچستان حکومت اور پلاننگ کمیشن آمنے سامنے آگئے ہیں۔ صوبائی حکومت نے وفاق کی سفارشات کو ماننے سے انکار کردیا جب کہ سیکرٹری پلاننگ کمیشن بھی بے بس ہوگئے ہیں۔

ضرور پڑھیں: چیف جسٹس آف پاکستان نے سندھ حکومت کو ایک ہفتہ کا الٹی میٹم دے دیا

بلوچستان حکومت نے گوادر کول پاور پراجیکٹ کا این او سی جاری کرنے سے انکار کردیا ۔ محکمہ ماحولیات نے گوادر کول پاور پراجیکٹ پر اعتراضات لگائے ہیں ۔ وفاقی حکومت کا کہنا ہے کہ محکمہ ماحولیات کے اعتراضات بلا جواز ہیں۔

چینی کمپنی گوادر میں جدید ٹیکنالوجی کا کول پاور پلانٹ لگا رہی ہے۔ پرائیویٹ پاور انفرا اسٹرکچر ڈویلپمنٹ بورڈ نے 2015 میں چینی کمپنی کو گوادر کول پاور پراجیکٹ کا این او سی جاری کیا تھا تاہم منصوبہ دو سال سے التواء کا شکار ہے۔