امریکا ایران کی ایک دوسرے کو دھمکیاں،جنگ کےدہانے پرپہنچ گئے

امریکا ایران کی ایک دوسرے کو دھمکیاں،جنگ کےدہانے پرپہنچ گئے


نیویارک( 24نیوز ) امریکا اورایران میں بڑھتی ہوئی کشیدگی جنگ کے آثار نمودار کررہی ہے،امریکی قومی سلامتی کے مُشیر جان بولٹن کا کہنا ہے کہ ایرانی حکومت جلد ختم ہوجائے گی، جبکہ ایران نے کہا ہے کہ جنگ ہوئی تو امریکہ اسرائیل کے اتحاد کو ہم ہی شکست دیں گے ۔

تفصیلات کے مطابق امریکہ نے ایران اور عراق سے غیر سفارتی عملہ واپس بلا لیاہے ، امریکا نے یہ بھی کہا ہے کہ عراق میں ایران نواز گروہ امریکی فوجیوں ،سفارتکاروں اور شہریوں کے لئے سنگین خطرہ ہیں، امریکی قومی سلامتی کے مشیر جان بولٹن کاکہناتھاکہ ایران کی حکومت جلد ختم ہوجائےگی،دوسری طرف ایران نے کہا  کہ ہم جنگ نہیں چاہتے لیکن اگرجنگ ہوئی تو امریکہ اسرائیل اتحاد کوہم ہی شکست دیں گے کیونکہ ایران اس وقت اپنی دفاعی طاقت کی بُلندی پرہے۔

عالمی مبصرین اور دفاعی امو ر کے ماہرین کا کہنا ہے کہ صورتحال انتہائی سنگین ہے، امریکہ کے بی 52بمبار طیاروں کے اسکوارڈن قطر اور متحدہ عرب امارات پہنچ چُکے، جو خلیج فارس میں مشقوں میں حصہ لے رہے ہیں،اپنے اتحادیوں کو ممکنہ جنگ کی صورت میں ایرانی میزائلوں سے بچانے کیلئے امریکہ نے پیٹریاٹ میزائلوں کی بیٹریاں بھی خلیج فارس پہنچادی ہیں، امریکی بحری بیڑہ ابراہیم لنکن پہلے ہی خلیج فارس میں موجود ہے۔

 نیویارک ٹائمز کی رپورٹ کے مطابق ایک ہزار سے زائد امریکی فوجی خلیج فارس پہنچ چکے ہیں، ایسےمیں کوئی معمولی حادثہ یا واقعہ ایسی چنگاری ثابت ہوسکتاہےجس سےلگنے والی آگ میں پورا خطہ لپیٹ میں آجائے،روس،چین اور یورپی ممالک ایران کے ساتھ ہونے والے جوہری معاہدے کے ضمانتی ہیں وہ اس صورتحال سے سخت پریشان ہیں، مگر اُنہیں یہ سمجھ نہیں آرہی کہ امریکہ کو کس طرح سے سمجھایا جائے،کیونکہ امریکہ ایران پر جنگ مسلط کرنے کیلئے تُلا ہوا ہے۔

M.SAJID KHAN

CONTENT WRITER