پاکستان کڈنی اینڈ لیور انسٹیٹیوٹ کا آڈٹ کرانے کا حکم

پاکستان کڈنی اینڈ لیور انسٹیٹیوٹ کا آڈٹ کرانے کا حکم


اسلام آباد( 24نیوز ) سپریم کورٹ نے پاکستان کڈنی اینڈ لیور انسٹیٹیوٹ سے متعلق نوٹس میں اقبال حمید الرحمن پر مشتمل کمیٹی سے 15 روز میں جواب طلب کر لیا جبکہ عدالت نے نجی ہسپتالوں میں سہولیات کی عدم فراہمی سے متعلق پنجاب ہیلتھ کمیشن نے 10 تاریخ تک علاج کی فیسوں کے حوالے سے رپورٹ طلب کر لی۔

سپریم کورٹ میں پاکستان کڈنی اینڈ لیور انسٹیوٹ سے متعلق از خود نوٹس اور نجی ہسپتالوں میں سہولیات کی عدم فراہمی سے متعلق کیس کی سماعت چیف جسٹس کی سربراہی میں تین رکنی بنچ نے کی۔ کڈنی اینڈ لیور انسٹیوٹ نوٹس میں چیف جسٹس نے حکم دیا کہ مجاہد شیردل اور ڈاکٹر سعید اختر آڈٹ رپورٹ پر جواب جمع کرائیںجبکہ اقبال حمید الرحمن پر مشتمل کمیٹی 15 روز میں جواب دیں ،عدالت نے حکم دیا کہ فرانزک آڈٹ فرم کو 20 لاکھ روپے ادا کیے جائیں۔

سپریم کورٹ نے نجی ہسپتالوں میں سہولیات کی عدم فراہمی سے متعلق کیس میں فیصلہ دیا کہ پنجاب ہیلتھ کمیشن 10 تاریخ تک علاج کی فیسوں کے حوالے سے رپورٹ دے، اور وہی فارمولا تمام نجی ہسپتالوں پر لاگو ہوگا۔سماعت کے دوران سماعت چیف ثاقب نثار نے شکوہ کیا کہ اوورسیز پاکستانیوں کو سپریم کورٹ نے ووٹ کا حق لیکر دیا,اس کا سارا کریڈٹ وزیراعظم لے رہے ہیں,حد ہوگئی ہے,عدالت نے کیس کی سماعت غیر معینہ مدت کیلئے ملتوی کردی۔

اظہر تھراج

Senior Content Writer