امن کوششیں بے سود،جنگ بندی معاہدہ ہوتے ہی ٹوٹ گیا

امن کوششیں بے سود،جنگ بندی معاہدہ ہوتے ہی ٹوٹ گیا


صنعا( 24نیوز ) یمن میں امن کوششیں بے سود،جنگ بندی معاہدہ نافذ ہوتے ہی ٹوٹ گیا۔

یمن کے شہر حدیدہ میں حکومتی افواج اور حوثی باغیوں کے درمیان طے پانے والا جنگ بندی کا معاہدہ نافذ العمل ہونے کے چند لمحوں بعد ہی ٹوٹ گیا ہے،متحارب فریقین نے اتفاق کیا تھا کہ وہ پیر کو نصف شب سے اس ساحلی شہر میں جنگ بندی کر لیں گے جس کے بعد یہاں امداد کی آمد کا سلسلہ شروع ہو سکے گی۔

عرب میڈیا کے مطابق تاہم شہر سے حوثی باغیوں اور حکومت کی حامی افواج کے درمیان جھڑپوں کی اطلاعات موصول ہوئی ہیں،اطلاعات کے مطابق باغیوں نے شہر کے مشرقی علاقے میں حکومتی افواج کے ٹھکانوں پر گولہ باری کی ہے۔ ایک حکومتی اہلکار نے بتایا ہے کہ جھڑپوں کا سلسلہ جاری ہے۔

یاد رہے یمن میں چار برس سے خانہ جنگی جاری ہے اس جنگ کے دوران ہزاروں افراد جاں بحق،متعدد زخمی تو کئی اپاہج ہوچکے ہیں،شہروں کا انفرا سٹرکچر تباہ ہوچکا ہے۔

ایک سعودی سفارتکار کے مطابق سعودی عرب اور اس کے اتحادی اس معاہدے کے حامی ہیں جس کے تحت فریقین اپنے فوجی حدیدہ سے نکال لیں گے تاکہ امداد وہاں لائی جا سکے۔ایرانی وزارتِ خارجہ کے ترجمان نے بھی اس معاہدے کو امیدا افزا قرار دیا تھا جبکہ امریکی وزیرِ خارجہ مائیک پومپیو نے کہا تھا کہ اب امن کا قیام ممکن ہے۔

اظہر تھراج

Senior Content Writer