ناقص حکمت عملی،قبائلی اضلاع میں جاری ترقیاتی کاموں کا پول کھل گیا

ناقص حکمت عملی،قبائلی اضلاع میں جاری ترقیاتی کاموں کا پول کھل گیا


پشاور(عظمت علی شاہ) قبائلی اضلاع میں ترقیاتی فنڈزکی قلت کے باعث حکومت کوتنقیدکاسامنا کرنا پڑرہا ہے،پانچ ماہ سے زائد عرصہ میں قبائلی اضلاع کو صرف 15 فیصد ترقیاتی فنڈ جاری کیا جاسکا۔

حکومت نے قبائلی اضلاع کو ترقی یافتہ اضلاع کے برابر لانے کا اعلان توکیا لیکن ان اضلاع کے دکھوں کا مداوا ابھی تک نہیں ہوسکا،قبائلی علاقوں میں رواں سال کے دوران ترقیاتی کاموں کیلئے 83 ارب روپے مختص کئے گئے۔جن میں سے 72 ارب وفاق اور 11 ارب خیبر پختونخوا حکومت نے جاری کرناتھے۔مگر وفاق نے پانچ ماہ سے زائد عرصہ گزرجانے کے باوجود صرف 12 ارب 78 کروڑ روپے جاری کئے ہیں۔

وفاق سے مطلوبہ فنڈزنہ ملنے کی وجہ سے جہاں وفاق تنقید کی زدمیں ہے، وہیں صوبائی حکومت کو بھی مشکلات درپیش ہیں۔ خیبرپختونخوا کی حکومت نے ترقیاتی فنڈز جاری نہ کئے جانے پروفاق کے ساتھ معاملہ اٹھانے کا فیصلہ کرلیا ہے۔

دوسری طرف قبائلی اضلاع کیلئے مناسب منصوبہ بندی نہ ہونے کے باعث وفاق سے ملنے والے13 ارب روپے میں سے بھی صرف 7 ارب روپے خرچ کئے جا سکےہیں۔ قبائلی اضلاع کیلئے بیشتر ترقیاتی فنڈز نئے سرکاری دفاتر اور سڑکوں کی تعمیر کیلئے مختص کئے گئے ہیں۔

اظہر تھراج

Senior Content Writer