سوئی سدرن گیس کمپنی کا تجارتی قرضہ خطرناک حد تک بڑھ گیا

سوئی سدرن گیس کمپنی کا تجارتی قرضہ خطرناک حد تک بڑھ گیا


اسلام آباد (24نیوز) سوئی سدرن گیس کمپنی کا تجارتی قرضہ خطرناک حد تک بڑھ گیا،اکاؤنٹس کمیٹی میں آڈٹ حکام نے انکشاف کیا کہ کمپنی کے تجارتی قرضے 90 ارب سے تجاوز کرگئے,او جی ڈی سی ایل میں 170 ملازمین کی جعلی ڈگریوں کا بھی انکشاف کیا گیا۔

تفصیلات کے مطابق اپوزيشن ليڈر خورشید شاہ کی زیر صدارت پبلک اکاؤنٹس کمیٹی کا اجلاس ہوا سیکرٹری انرجی نے بتایا کہ اسٹیل مل کے ذمہ 20 ارب کے واجبات ہیں،شیخ رشید نےسوال کیا کہ بتایا جائے گردشی قرضہ کتنا ہوگیا جس پر چیئرمین کمیٹی بولے گردشی قرضہ پھر 500 ارب تک پہنچ گیا۔

آڈٹ حکام نے یہ بھی بتایا کہ پانچ ملازمین کو مکمل مراعات کے ساتھ جبری ریٹائرمنٹ دی گئی ایم ڈی او جی ڈی سی ایل نے بتایا کہ بعض ملازمین نے تعلیمی سرٹیفکیٹ میں ٹیمپرنگ کی جس پر چیئرمین کمیٹی نے مکمل تحقیقات تک پیرا موخر کر دیا۔

کمیٹی میں اوجی ڈی سی ایل کی کے پی میں ڈرلنگ کے دوران 7ارب 82کروڑ روپے کے غیر معیاری کمیکل کے استعمال کا انکشاف بھی کیا گیا پی اے سی نے سی این جی اسٹیشنز کے معائنہ سے متعلق اوگرا کے خصوصی آڈٹ کی ہدایت کر دی۔