ریکارڈ مالیت کے قرضے، حکومت کے اخراجات پورے نہ ہو سکے


اسلام آباد(24نیوز) بینکوں سے ریکارڈ مالیت کے قرضے بھی حکومت کے اخراجات پورے نا کر سکے۔ ہفتے کے دوران اوسطا یومیہ 14 ارب 44 کروڑ روپے کے نئے نوٹ چھاپے گئے زیر گردش نوٹ تاریخ میں پہلی بار 43 کھرب روپے سے بھی تجاوز کر گئے۔

 تفصیلات کے مطابق اسٹیٹ بینک کے مطابق مارچ پہلے ہفتے کے دوران حکومت کی طرف سے ایک کھرب ایک ارب 8 کروڑ 59 لاکھ روپے مالیت کے نئے نوٹ جاری کیے گئے۔

 جس کے باعث جاری شدہ نوٹوں کی مجموعی مالیت ملکی تاریخ میں پہلی بار 43 کھرب 37 ارب 13 کروڑ 40 لاکھ روپے کی نئی بلند ترین سطح پر پہنچ گئی۔  اس دوران مارکیٹ میں زیر گردش نوٹوں کا مجموعی حجم ایک کھرب ایک ارب 3 کروڑ 40 لاکھ روپے کے اضافے سے 43 کھرب 36 ارب 97 کروڑ 5 لاکھ روپے کی رکارڈ سطح پر پہنچ گیا۔

 ن لیگ کے موجودہ دورہ حکومت میں اب تک 22 کھرب 84 ارب 28 کروڑ روپے کے نئے نوٹ جاری کیے جا چکے ہیں۔ اقتصادی ماہرین کے مطابق اخراجات آمدنی سے بہت زیادہ ہونے کی وجہ سے حکومت کو قرض لینا اور نئے نوٹ چھاپنے کی ضرورت پڑتی ہے۔