نقیب اللہ قتل کیس: راؤ انوار کی کمرہ عدالت میں گپ شپ، اے سی چلانے کی درخواست

نقیب اللہ قتل کیس: راؤ انوار کی کمرہ عدالت میں گپ شپ، اے سی چلانے کی درخواست


کراچی (24نیوز)انسداد دہشت گردی کی عدالت نے نقیب اللہ محسود قتل کیس میں تفتیشی افسر سے سی سی ٹی وی فوٹیج کی مزید کاپیاں طلب کرلیں۔

انسداد دہشت گردی کی کراچی کی عدالت میں نقیب اللہ قتل کیس کی سماعت ہوئی ۔ عدالت میں سابق ایس ایس پی ملیر راؤ انوار سمیت دیگر ملزمان کو پیش کیا گیا ۔ عدالت میں تفتیشی افسر نے سی سی ٹی وی فوٹیج و دیگر شواہد پیش کئے، پولیس نے مفرور ملزمان شعیب شوٹر، امان اللہ مروت اور دیگر کی عدم گرفتاری سے متعلق رپورٹ بھی عدالت میں پیش کی ۔

یہ بھی پڑھیں: ملک میں دو قانون ہیں،پنجاب کا الگ،سندھ کا الگ ہے:شرجیل میمن

دوسری جانب عدالت میں مقدمے کے شریک ملزم سابق ڈی ایس پی ملیر قمر احمد کی جانب سے درخواست ضمانت دائر کردی ، جس میں موقف اپنایا گیا کہ وہ موقعہ واردات پر موجود نہیں تھے اور نہ ہی جے آئی ٹی میں ان کا کوئی ذکر ہے۔عدالت نے ملزم کی درخواست پر سرکاری وکلاء کو نوٹس جاری کردیئے،کمرہ عدالت میں راؤ انوار مطمئن اور ساتھیوں سے گپ شپ کرتے نظر آئے، راؤ انوار نے کمرہ عدالت میں اے سی بند ہونے پرشکوہ کیا، پنکھا چلا دیا گیا ۔

سماعت کے دوران راؤ انوار کی جانب سے مقدمے میں بی کلاس کی سہولت فراہم کرنے کی درخواست پر وکلا نے دلائل دیئے، عدالت نے تفتیشی افسر سے سی سی ٹی وی فوٹیجز کی سی ڈیز کی کاپیز طلب کرتے ہوئے سماعت 28 مئی تک ملتوی کردی۔

وقار نیازی

سٹاف ممبر، یونیورسٹی آف لاہور سے جرنلزم میں گریجوایٹ، صحافی اور لکھاری ہیں۔۔۔۔