امریکہ اور بھارت کی نظریں سی پیک پر ہیں: سابق وزیر داخلہ رحمان ملک


 لاہور(24نیوز): سابق وزیر داخلہ سینیٹر رحمان ملک نے کہا ہے کہ اگر مسلم لیگ ن نے تصادم کی سیاست بہ چھوڑی تو جمہوریت کا جہاز پاش پاش ہو جائے گا۔ آج نواز شریف کہ رہے ہیں کہ مجھے کیوں نکالا ہو سکتا ہے کل سب کہیں گے کہ ہمیں کیوں نکالا۔ بلوچستان میں نریندر مودی کی مداخلت کا معاملہ اقوام متحدہ میں اٹھانے کا بھی مطالبہ کرتے ہوئے وزیر اعظم مودی کو دہشتگرد قرار دے دیا۔

سابق وزیر داخلہ رحمان ملک کی مسلم لیگ ن پر تنقید اور کچھ مشورے۔ خبردار کر دیا کہ مسلم لیگ ن نے تصادم کی سیاست بہ چھوڑی تو جمہوریت کا جہاز پاش پاس ہوجائے گا۔

رحمان ملک نے کراچی میں ایم کیو ایم اور پی ایس پی کی راہیں جدا ہونے کی وجہ بھی بتادی۔ کہتے ہیں چھوٹا بھائی بڑا بھائی بننا چاہتا تھا اور بڑا چھوٹا درمیان میں موٹا بھائی آگیا۔

رحمان ملک نے بھارتی وزیر اعظم نریندر مودی کو تنقید کا نشانہ بنایا بولے بھارت نے بلوچستان کے حالات خراب کرنے کے لئے پچاس کروڑ روپے مختص کئے ہیں ۔

رحمان ملک کا کہنا تھا امریکہ اور بھارت کی نظریں سی پیک پر ہیں۔ ان کا مزید کہنا تھا کہ دو ہفتے سے اسلام آباد میں نظام زندگی معطل ہے حکومت اسلام آباد ہائی کورٹ کے فیصلے پر عمل درآمد کروائے۔