پرویزمشرف سنگین غداری کیس کا فیصلہ محفوظ



اسلام آباد(24نیوز)خصوصی عدالت نے سابق صدر پرویزمشرف کے خلاف سنگین غداری کیس کا فیصلہ محفوظ کرلیا۔  28 نومبر کو سنایا جائے گا۔وکیل کو26 نومبرتک تحریری دلائل جمع کرانے کا موقع دیا گیا۔

جسٹس وقار احمد سیٹھ کی سربراہی میں تین رکنی خصوصی عدالت نے پرویزمشرف سنگین غداری کیس کی سماعت کی۔ جسٹس وقار احمد نے استفسار کیا کہ کیا استغاثہ ٹیم کو ہٹانے سے پہلے عدالت سے اجازت لی گئی؟ جس پر ڈپٹی اٹارنی جنرل نے بتایا کہ حکومت تبدیلی کے بعد پراسیکیوٹراکرم شیخ نے استعفی دیا۔

جسٹس نذر اکبر نے ریمارکس دیئے کہ وزارت داخلہ کو معلوم نہیں پراسیکوٹرکےاستعفیٰ کےبعد بھی استغاثہ ٹیم کام کررہی ہے؟ ڈپٹی اٹارنی جنرل نے کہا کہ وزارت داخلہ کو شاید اس بات کا علم ہو، اس پر جسٹس نذر اکبر کا کہنا تھا کہ کیسے ممکن ہے پیش ہونے والے افسران کو علم نہ ہو، شاید والی کیا بات ہے؟

جسٹس وقار احمد سیٹھ نے استفسارکیا کہ مشرف کے وکیل کہاں ہیں ؟ رجسٹرار خصوصی عدالت نے بتایا کہ وہ عمرہ کے لئے گئے ہیں۔ جس پر عدالت نے کیس کا فیصلہ محفوظ کر لیا جو 28 نومبر کو سنایا جائے گا۔

سٹاف ممبر، یونیورسٹی آف لاہور سے جرنلزم میں گریجوایٹ، صحافی اور لکھاری ہیں۔۔۔۔