وفاقی دارالحکومت کے سرکاری ہسپتالوں میں سہولیات کا فقدان

وفاقی دارالحکومت کے سرکاری ہسپتالوں میں سہولیات کا فقدان


اسلام آباد کےسرکاری اسپتال مریضوں کوسہولیات دینےکی بجائےزندگیاں خطرےمیں ڈالنےلگے،20 سے زائد مریض دل کاآپریشن ہونےکےانتظارمیں خوارہونےلگے.

اسلام آباد کے سب سے بڑے سرکاری اسپتال پمز میں شعبہ امراض قلب میں فنڈز نہ ہونے کے باعث 20 سے زائد مریضوں کے آپریشن نہ ہوسکے، بیت المال کی جانب سےکئی مریضوں کے علاج کیلئے رقم دے دی گئی مگراسپتال انتظامیہ کی جانب سے آپریشن کا وقت ہی دیا جارہاہے۔

گلگت سمیت ملک کے مختلف علاقوں کے مریض پمز اسپتال میں اسٹنٹ نا ہونے کی وجہ سے خوار ہو رہے ہیں،مریضوں کے لواحقین کا کہنا ہے کہ کئی مہینوں سے آپریشن کی صرف تاریخ پر تاریخ دی جارہی ہے مگر آپریشن نہیں کر رہے۔

حکومت کی جانب سےپمزاسپتال میں مریضوں کوسہولیات دینے کے دعوے تو کیے جا رہے ہیں مگر مریض اس ہی انتظار میں ہیں کہ کب انکا آپریشن ہوگا.

سٹاف ممبر، یونیورسٹی آف لاہور سے جرنلزم میں گریجوایٹ، صحافی اور لکھاری ہیں۔۔۔۔