کراچی، آن لائن ٹیکسی میں خاتون کو ہراساں کرنیکا واقعہ



کراچی (24نیوز) کراچی میں طالبہ نے چلتی گاڑی سے چھلانگ لگادی، آن لائن ٹیکسی سروس پر سفر کرنے والی لڑکی نے موقف اختیار کیا کہ ڈرائیور نے اس کو ہراساں کیا،ڈرائیور نے لڑکی کے الزامات مسترد کر دئیے، پولیس نے مقدمہ درج کر لیا، تاہم ملزم کو شخصی ضمانت رہا کر دیا۔

کراچی میں شاہراہ فیصل پر میڈیکل کی طالبہ نے چلتی گاڑی سے چھلانگ لگادی، لڑکی نے چھلانگ اس وقت لگائی جب وہ آن لائن ٹیکسی کے ذریعے سفر کررہی تھی۔  لڑکی کا موقف ہے کہ ڈرائیور نے اسے ہراسا ں کرنے کی کوشش کی، اسے گھورا اور روٹ تبدیل کیا جس پر اس نے گاڑی سے چھلانگ لگادی۔

لیکن آن لائن ٹیکسی سروس کے ڈرائیور نے الزام کی سختی سے ممانعت کی ہے۔ ڈرائیور نے پولیس کو ریکارڈ کرائے گئے بیان میں کہا کہ لڑکی نے سراسر جھوٹ کہا ہے۔  لڑکی نے تین بار ڈراپ لوکیشن تبدیل کی۔ اور آخری بار صدر جانے کو کہا,  پولیس نے واقعے کا مقدمہ درج کرکے تحقیقات شروع کردی ہیں۔پولیس نے کیس میں کمزور شواہد کی بناء پرملزم کو فی الحال شخصی ضمانت پر رہا کردیا ہے۔

دوسری جانب سندھ حکومت کے محکمہ برائے انسانی حقوق ڈاکٹر کھٹو مل جیون نےواقعے کا نوٹس لیتے ہوئے معاملےکی رپورٹ طلب کرلی ہے۔

سٹاف ممبر، یونیورسٹی آف لاہور سے جرنلزم میں گریجوایٹ، صحافی اور لکھاری ہیں۔۔۔۔