وادی نیلم میں تعمیر کیا گیا پل پہلے سے بھی زیادہ خطرناک

05:43 PM, 21 Jun, 2018

حرا اعوان

مظفرہ آباد(24نیوز) وادی نیلم میں پل گرنے سے ہلاکتوں کا غم بھول گیا، یا آزاد کشمیر حکومت نے کوئی سبق نہیں سیکھا،حکومت کی غفلت کے باعث شہریوں نے اپنی مدد آپ کے تحت لکڑی کے تختوں سے نیا پل بنالیا، یہ پل انتہائی کمزورہونے کی وجہ سے کسی وقت بھی گرسکتا ہے۔

تفصیلات کے مطابق وادیِ نیلم میں چند ہفتے قبل پل گرنے سے ہونے والی ہلاکتوں کے زخمی ابھی بھرے نہیں کہ سیاہوں کی بڑی تعداد پھر اسی مقام پر پہنچ گئی ہے۔ اتنے بڑے حادثے کے باوجود آزاد کشمیر حکومت خواب خرگوش کے مزے لے رہی ہے۔ کڈن شاہی کے مقام پر پل گرنے سے متعدد افراد ہلاک ہوگئے تھے۔ 24 نیوز حادثے کے مقام پر پہنچ کر حقائق عوام کو دکھا دیئے۔آزاد کشمیر حکومت نے اتنے بڑے حادثے کے بعد بھی ہوش کے ناخن نہ لئے۔ پل تعمیر نہ ہونے سے راستہ کٹا تو مقامی لوگوں نے لکڑی کا پل بنا دیا۔

یہ لازمی پڑھیں:الیکشن مہم 2018 میں شہباز شریف 6 زبانیں بولیں گے 

 علاوہ ازیں پل دیکھنے سے ہی اندازہ ہوتا ہے کہ کس قدر کمزور ہے اور کسی بھی وقت حادثے کا شکار ہو سکتا ہے۔حکومت نے شہریوں کی حفاظت کے اقدامات نہ کیئے مگر حادثے کے بعد سیاحوں نے احتیاطی تدبیر اختیار کرنا شروع کر دی ہیں۔مقامی افراد کا کہنا ہے کہ آزاد کشمیر حکومت کی جانب سے پل کی تعمیر کا کوئی منصوبہ سامنے نہیں آیا۔ دریا کے دوسری طرف متعدد دیہات کا راستہ منقطہ ہو گیا تھا۔مجبوری میں پل اپنی مدد آپ کے تحت تعمیر کیا گیا۔

مزیدخبریں