شاعری کو کبھی موت نہیں آتی ،آج شاعری کا عالمی دن منایا جا رہا ہے

شاعری کو کبھی موت نہیں آتی ،آج شاعری کا عالمی دن منایا جا رہا ہے


24نیوز:عالمی یوم شاعری ہر سال 21 مارچ کو منایا جاتا ہے،یونیسکو کی جانب سے اس دن کو مختص کیا گیا، جس کا مقصد پوری دنیا میں شاعری کے متعلق پڑھنے، پڑھانے اس کو چھاپنے اور شاعری کے متعلق آگاہی دینے کا دن ہے۔

تفصیلات کے مطابق احساسات و جذبات کو الفاظ کا پیرہن دینے اور الفاظ کی مالا میں پرونے کا ہنرشاعری کہلاتا ہے۔ اردو ادب میں غالب ، میر تقی میر، میر انیس اور پھر اقبال کے کلام عالمی شہرت کے حامل ہیں۔افتخار عارف کہتے ہیں شاعری کو کبھی موت نہیں آتی۔

علاوہ ازیں شاعری کی مختلف اصناف میں حمد، نعت، مثنوی، مسدس، نظم ، گیت اور غزل سرِ فہرست ہیں۔ماہین کا کہنا ہے۔ دل کی بات کو دل والوں تک دلکشی سے پہنچانے کانام شاعری ہے۔

واضح رہے کہ اردو شعراء میں فیض احمد فیض، حسرت موہانی، ابنِ انشا، حبیب جالب، شکیب جلالی، ناصر کاظمی، محسن نقوی،احمد فراز، منیر نیازی، پروین شاکر، قتیل شفائی،افتخار عارف اور جون ایلیاء جیسے عظیم نام ملتے ہیں۔