سندھ ہائیکورٹ کا نیب پراسیکیوٹر پر سخت برہمی کا اظہار

سندھ ہائیکورٹ کا نیب پراسیکیوٹر پر سخت برہمی کا اظہار


کراچی(24نیوز) سندھ ہائیکورٹ نے نیب پراسیکیوٹرپرسخت برہمی کا اظہارکیا ہے،عدالت کا کہنا ہے لگتا ہے پراسیکیوٹرکومقدمہ سے متعلق کوئی علم ہی نہیں۔ نیب جس کے خلاف چاہتاہے ریفرنس دائرکردیتا ہے بعد میں پتہ چلتا ہے ثبوت کوئی بھی نہیں۔آغا سراج درانی اوردیگرکے خلاف کیس میں سماعت ہوئی۔

سندھ ہائیکورٹ میں اسپیکر سندھ اسمبلی آغا سراج درانی و دیگر ملزمان کی درخواست ضمانت پر سماعت ہوئی،  دوران سماعت نیب پراسیکوٹر سے عدالت نے استفسار کیا کہ 1985 سے لیکر ابتک تفتیش کے دوران جو اثاثے سامنے آئے ہیں اسکی تفصیلات بتائیں جو اثاثے آپ ریفرنس میں بتا رہے ہیں یہ تو درخواستگزار نے خود تفصیلات پیش کی ہیں.

عدالت نے برہمی کا اظہار کرتے ہوئے ریمارکس دیئے کہ اگر اثاثوں کی تفصیلات ملزمان نے پیش کرنی ہے تو نیب اپنے دفاتر بندکردے، ایسا لگتا ہے آپ کو اس ریفرنس سے متعلق کوئی علم نہیں آپ لوگ جس کے خلاف چاہتے ہیں غیرقانونی اثاثے بنانے کا ریفرنس دائر کر دیتے ہیں،ایسے سینکڑوں کیسز نیب چلا رہی ہے اورپھرآخر میں پتہ چلتا ہے کے ملزم کے خلاف کوئی ثبوت نہیں ملا اورانکوائری بندہوگئی.

بعد ازاں عدالت نے ائندہ سماعت پر نیب پراسیکیورٹر کو تیاری کے ساتھ پیش ہونےکا حکم دیتے ہوئے سماعت 28 اکتوبر تک ملتوی کردی.

سٹاف ممبر، یونیورسٹی آف لاہور سے جرنلزم میں گریجوایٹ، صحافی اور لکھاری ہیں۔۔۔۔