قائد اعظم یونیورسٹی میں منشیات کا ا ستعمال کیوں؟ ترجمان نے وجہ بتا دی

قائد اعظم یونیورسٹی میں منشیات کا ا ستعمال کیوں؟ ترجمان نے وجہ بتا دی


اسلام آباد ( 24 نیوز ) تعلیمی اداروں میں منشیات کے استعمال پر قائداعظم یونیورسٹی کا نام ہی سب سے پہلے کیوں لیا جاتا ہے؟  ترجمان قائداعظم یونیورسٹی نے جامعہ کی چار دیواری نہ ہونا اس کی وجہ قرار دے دی،  کہتے ہیں 13 ہزار سے زائد طلبا پر نظر رکھنا آسان نہیں ہے۔

دنیا بھر کے بہت سے ممالک منشیات فروشی جیسے مسائل کا شکار ہیں جن میں پاکستان بھی شامل ہےلیکن افسوسناک بات یہ ہے کہ نشے کی برائی سڑکوں سے نکل کر ملک کے تعلیمی اداروں تک پہنچ چکی ہے، عالمی درجہ بندی میں ٹاپ 10 میں شامل پاکستان کی قائداعظم یونیورسٹی میں منشیات کےاستعمال کے بہت چرچے ہیں۔ اب تک کئی منشیات فروش گرفتار کیے جا چکے ہیں جن میں غیر ملکی بھی شامل ہیں۔

ترجمان قائداعظم یونیورسٹی عامر وسیم کا کہنا ہے کہ یونیورسٹی انتظامیہ کے پاس اتنے وسائل نہیں کہ 13000 طلبا کی نگرانی کرسکیں، جامعہ کی چار دیواری نہ ہونا بھی بڑا اور اہم مسلہ ہے۔ جامعہ میں کئی گاوں بھی ہیں جہاں سینکڑوں لوگ مقیم ہیں جس کا راستہ یونیورسٹی سے ہوتے ہوئے گزرتا ہے۔ ترجمان قائداعظم یونیورسٹی نے ضلعی انتظامیہ سے تعاون کی اپیل کی ہے تا کہ منشیات کی روک تھام کیلئے اقدامات کیے جاسکیں۔